Headlines

حماس-اسرائیل جنگ 44 ہزار کروڑ روپے کا پڑا، وزیر اعظم نیتن یاہو کے بھی چھوٹ گئے پسینے! جی ڈی پی پر بھی لگی بڑی چوٹ

حماس-اسرائیل جنگ 44 ہزار کروڑ روپے کا پڑا، وزیر اعظم نیتن یاہو کے بھی چھوٹ گئے پسینے! جی ڈی پی پر بھی لگی بڑی چوٹ

حماس-اسرائیل جنگ 44 ہزار کروڑ روپے کا پڑا، وزیر اعظم نیتن یاہو کے بھی چھوٹ گئے پسینے! جی ڈی پی پر بھی لگی بڑی چوٹ

یڈر کیپیٹل مارکیٹس کے ذریعہ جنگ کی مالی قدر کا تخمینہ پہلے 2023-2024 میں 180 بلین شیکل لگایا گیا تھا۔ وزارت خزانہ نے کہا تھا کہ جنگ کی وجہ سے معیشت کو روزانہ تقریباً 270 ملین ڈالر کا نقصان ہو رہا ہے۔

تل ابیب: اسرائیل-حماس کے درمیان مسلسل 53 روز سے جنگ جاری ہے۔ اس عرصے کے دوران دونوں ملکوں کو جان و مال کا بہت زیادہ نقصان ہوا ہے۔ ایک طرف اسرائیلی حملے میں 14 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ جبکہ 1400 اسرائیلی مارے جا چکے ہیں۔ جبکہ 240 افراد کو حماس نے یرغمال بنا لیا تھا۔ تاہم جنگ بندی کے دوران حماس کے جنگجوؤں نے کئی یرغمالیوں کو رہا کر دیا تھا۔ لیکن اس دوران اسرائیل نے غزہ کی پٹی سے حماس کو مکمل طور پر ختم کرنے کے لیے حملے کیے ہیں جن میں میزائل، ٹینک، بندوقیں اور ہر قسم کے ہتھیار استعمال کیے گئے ہیں۔ ادھر اسرائیل کے مرکزی بینک نے حماس کے ساتھ جنگ ​​کے معاشی اثرات کا جائزہ لیا ہے۔

بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق اس جنگ کی وجہ سے اسرائیل کو بہت زیادہ معاشی نقصان ہو رہا ہے۔ بینک کے ریسرچ ڈیپارٹمنٹ نے رپورٹ کیا کہ لاگت کا تخمینہ 53 بلین ڈالر(198 بلین شیکل) لگایا گیا تھا، جو کل دفاعی اخراجات کا نصف سے زیادہ تھا۔ جنگ کی مالی لاگت کا اندازہ پہلے لیڈر کیپٹل مارکیٹس نے 2023-2024 میں 180 بلین شیکل لگایا تھا۔ وزارت خزانہ نے کہا تھا کہ جنگ کی وجہ سے معیشت کو روزانہ تقریباً 270 ملین ڈالر کا نقصان ہو رہا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *