Headlines

اسرائیل میں نیتن یاہو کے خلاف غصہ پھوٹ پڑا، ہزاروں لوگ سڑکوں پر نکل آئے، استعفیٰ کا مطالبہ

اسرائیل میں نیتن یاہو کے خلاف غصہ پھوٹ پڑا، ہزاروں لوگ سڑکوں پر نکل آئے، استعفیٰ کا مطالبہ

مظاہرین نے نیتن یاہو پر الزام لگایا کہ وہ اسرائیلی شہریوں کے تحفظ سے زیادہ اپنی سیاسی بقا کی فکر کرتے ہیں۔ ساتھ ہی کچھ اسرائیلیوں نے نیتن یاہو پر یرغمالیوں کے اہل خانہ تک نہ پہنچنے پر بھی تنقید کی

تل ابیب: اسرائیل میں حماس کے اچانک حملے نے پوری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا، جس میں 1400 سے زائد اسرائیلی ہلاک ہوگئے۔ کئی سو افراد کو یرغمال بنا لیا گیا۔ حماس کے ہاتھوں یرغمال بنائے گئے متاثرین کے اہل خانہ نے اب بنجمن نیتن یاہو حکومت کے خلاف احتجاج شروع کر دیا ہے۔ لوگ حکومت کے خلاف پوسٹرز اور بینرز لے کر سڑکوں پر نکل آئے ہیں۔ ملک کے مختلف حصوں میں لوگ یہ مظاہرہ کر رہے ہیں۔ کئی دنوں سے یرغمال بنائے گئے لوگ ابھی تک اپنے گھروں تک نہیں پہنچے جس کی وجہ سے لوگ ناراض ہیں۔

ٹائمز آف اسرائیل کی رپورٹ کے مطابق درجنوں لوگ اب اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کے یرغمالیوں اور ان کے اہل خانہ کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے بحران سے نمٹنے کے لیے احتجاج کر رہے ہیں۔ احتجاج کرنے والی مونیکا لیوی نے کہا، “میں چاہتی ہوں کہ بنجمن نیتن یاہو اور ان کے تمام لوگ وطن واپس آئیں۔ کیونکہ انہوں نے جنوب کے باشندوں کو چھوڑ دیا ہے اور انہیں وہاں کے باشندوں کی زندگیوں سے کوئی دلچسپی نہیں ہے اور اس کے بجائے وہ چھوٹی موٹی سیاست میں مصروف ہیں۔

One thought on “اسرائیل میں نیتن یاہو کے خلاف غصہ پھوٹ پڑا، ہزاروں لوگ سڑکوں پر نکل آئے، استعفیٰ کا مطالبہ

  1. Wow, fantastic weblog layout! How long have you ever been running a blog for?

    you made running a blog look easy. The whole look of your website is fantastic,
    as neatly as the content material! You can see similar here e-commerce

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *