سدھاکر نے سیاسی زندگی دینے والی پارٹی کو دھوکہ دیا:سدرامیا

RushdaInfotech January 25th 2023 urdu-news-paper
سدھاکر نے سیاسی زندگی دینے والی پارٹی کو دھوکہ دیا:سدرامیا

چکبالاپور:24جنوری(محمد جیلانی) ریاست میں ہونے والے اسمبلی الیکشن میں اگر کانگریس اقتدار پر آئے گی تو بلاسودی قرضوں میں اضافہ کیا جائے گااور چاول بھی 10 کے جی دئیے جائیں گے۔چکبالاپور کے رکن اسمبلی سدھاکر کو سیاسی طور پر جنم دینے والی کانگریس پارٹی ہی ہے،اس کے باوجود آج کانگریس پارٹی کو ہی سدھاکر کو لے کر پچھتاوا کرنا پڑ رہا ہے۔یہ بات سابق وزیر اعلیٰ و اپوزیشن لیڈر سدرامیا نے شہر کی مضافات منعقد کئے گئے پرجا دھونی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔انہوں نے بتایا کہ آج کے ہر سروے سے پتہ چل رہا کہ ریاست میں کانگریس پارٹی کو اکثریت حاصل ہوگی،جس کی بدولت کانگریس پارٹی حکومت بنائے گی۔سدرامیا نے کہا کہ اس یقین پر کانگریس پارٹی نے ریاست کے عوام کو دو تحفے دینے کا اعلان کیا ہے پہلا 200یونٹ بجلی مفت اور دوسرا ہر گھر کی ذمہ دار عورت کو ماہانہ 2 ہزار دینے کا اعلان کیا ہے،انہوں نے ریاست کے عوام و بالخصوص چکبالاپور ضلع کے عوام سے درخواست کی کہ وہ یہاں کے پانچ اسمبلی حلقوں میں بھی کانگریس پارٹی کے امیدواروں کو کامیاب بنائیں۔ سدرامیا نے چیلنج کیا کہ اگر وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی کو دم ہے تو وہ عوامی طور پر بحث کیلئے تیار ہوکر آئیں جس سے دونوں حکومتوں کے اقتدار کے دوران ہوئی ترقیاتی و رشوت خوری معاملات کو اجاگر کیا جاسکے،سدرامیا نے کہا کہ ریاست میں اگر کوئی زیادہ رشوت خور وزیر ہے تو وہ ہیلتھ وزیر سدھاکر ہی ہیں اس لئے کہ کورونا وبا کے دوران ہر ایک کام میں رشوت خوری کا بازار گرم رہا ہے،یہاں تک کہ ماسک کی خریداری میں بھی رشوت خوری کی گئی ہے جو ایک اندازہ کے مطابق 2ہزار کروڑ روپئے ہے۔سدرامیا نے کہا کہ اگر حکومت چاہتی ہے تو سپریم کورٹ کے جج کی قیادت میں کمیشن بناکر کانگریس و بی جے پی حکومت کی انکوائری کرائی جائے ہم سب اس کیلئے تیار ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ سدھاکر نے اقتدار کی ہوس میں آپریشن کنول کا شکار ہوکر جنم دینے اور یم یل اے کی ٹکٹ دینے والی پارٹی کو دھوکہ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ قحط سالی سے متاثر اضلاع کیلئے کے سی ویلی،ہیچ ین ویلی اور یتنا ہولے پروجیکٹ ضلع کیلئے سرکاری میڈیکل کالج کی منظوری بھی ہماری حکومت میں دی گئی تھی۔ کے پی سی سی صدر ڈی کے شیوکمار نے کہا کہ ریاست کے عوام کیلئے جب سے ہم نے دو تحفوں کا اعلان کیا ہے اس وقت سے بی جے پی میں ہلچل مچ گئی ہے۔شیو کمار نے کہا کہ کانگریس پارٹی والے بھی ہندو ہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ریاست کرناٹک کو بی جے پی حکومت نے بدنام اور داغدار بنا دیا ہے۔ کانگریس پارٹی بی جے پی کے کسی بھی مقدمہ سے ڈرنے والی نہیں ہے۔انہوں نے بتایا کہ جب تک ریاست میں کانگریس پارٹی کی حکومت رہی تب تک ریاست میں کوئی داغدار نہیں تھا اور کرناٹک کا نام روشن تھا۔انہوں نے اعلان کیا کہ اقتدار پر آنے کے بعد اگر ہم نے اپنے وعدوں کے تحت کام نہیں کیا تو سیاسی طور پر سنیاس لے لیں گے۔شیوکمار نے اپیل کی کہ ضلع چکبالاپور کے پانچ اسمبلی حلقوں میں بھی پارٹی امیدواروں کو کامیاب بنائیں اور پارٹی کو طاقت ور بنائیں۔ اس موقع پر ودھان پریشد میں اپوزیشن لیڈر بی کے ہری پرساد،سابق وزیر اعلیٰ و سابق مرکزی وزیر ڈاکٹر ایم ویرپا موئیلی،سابق مرکزی وزیر کے ہیچ منی اپا، سابق وزیرا یم بی پاٹل نے بھی خطاب کیا۔ اس موقع پر ریاست کے انچارج و اے آئی سی سی جنرل سکریٹری رندیپ سنگھ سرجیوالا، سکریٹری ابھشیک دت،یوتھ کانگریس کے صدر محمد حارث نلپاڈ،مہیلا کانگریس صدر پشپا امرناتھ کے ساتھ ساتھ سابق وزرا و موجودہ ایم ایل ایز کرشنا بائرے گوڈا، رمیش کمار،شیو شنکر ریڈی، وی منی اپا،ایم ایل ایز سباریڈی،سابق ایم ایل اے ڈاکٹر یم سی سدھاکر،کتنور منجوناتھ، این سمپنگی،ایس ایم منی اپا،ناگراج،ضلع کے انچارج کیرلا کے شیوکمار،راجیہ سبھا ممبر وائی ہنومنتپا،شعبہ اقلیت کے ریاستی نائب صدر بی یس رفیع اللہ، کانگریس پارٹی کے ٹکٹ دعویدار ونئے شام، کے ا ین رگھو،این رمیش، راجیو گوڈا،سابق ضلع صدر نندی یم آنجنپا،ضلع یوتھ کانگریس صدر محمد مدثر،ضلع مہیلا کانگریس صدر یاسمین تاج کے علاوہ لیڈرس و ورکرس سمیت ہزاروں کی تعداد میں لوگ شریک رہے۔


Recent Post

Popular Links