لو،انٹر کاسٹ شادیاں قتل کی اہم وجوہات:چیف جسٹس آف انڈیا

RushdaInfotech December 19th 2022 urdu-news-paper
لو،انٹر کاسٹ شادیاں قتل کی اہم وجوہات:چیف جسٹس آف انڈیا

نئی دہلی:18دسمبر(ایجنسی)چیف جسٹس آف انڈیا ڈی وائی چندرچوڑ نے ہفتے کے روز کہا کہ ہندوستان میں سیکڑوں نوجوان غیرت کے نام پر قتل کی وجہ سے محض اس لیے مارے جاتے ہیں کہ وہ کسی سے محبت کرتے ہیں یا اپنی ذات یا اپنے خاندان سے باہر شادی کرتے ہیں، خاندان کی مرضی کے خلاف شادی کرتے ہیں -جن ستا کی رپورٹ کے مطابق انہوں نے کہاکہ بہت سے لوگ ذات سے باہر شادی کرنے پر مارے جاتے ہیں - سی جے آئی نے مزید کہا کہ اخلاقیات ایک سیال متصور ہے جو ایک شخص کا دوسرے شخص سے مختلف ہوتا ہے- انہوں نے ایک مضمون کا حوالہ دیا جس میں بتایا گیا تھا کہ کس طرح 1991 میں اتر پردیش میں ایک 15 سالہ لڑکی کو اس کے والدین نے قتل کر دیا تھا-آرٹیکل میں کہا گیا ہے کہ گاؤں والوں نے جرم کا اعتراف کر لیا ہے- ان کے کام قابل قبول اور جائز تھے(ان کیلئے)کیونکہ انہوں نے اس معاشرے کے ضابطہ اخلاق پر عمل کیا جس میں وہ رہتے تھے- تاہم کیا یہ وہ ضابطہ اخلاق ہے جو عقلی لوگوں نے پیش کیا ہوگا؟ ہر سال بہت سے لوگ محبت میں پڑنے یا اپنی ذات سے باہر یا اپنے خاندان کی مرضی کے خلاف شادی کرنے پر مارے جاتے ہیں -اخلاقیات کا فیصلہ اکثر بااثر گروہ کرتے ہیں -کمزور اور پسماندہ گروہوں کے افراد غالب گروہوں کے سامنے سر تسلیم خم کرنے پر مجبور ہیں اور جبر کی وجہ سے ثقافت ترقی نہیں کرتی-سی جے آئی نے کہا کہ پسماندہ طبقات سے تعلق رکھنے والے ارکان کے پاس اپنی بقا کیلئے غالب ثقافت کے سامنے سر تسلیم خم کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہے- معاشرے کے کمزور طبقات ظالم گروہوں کے ہاتھوں ذلت اور تنہائی کی وجہ سے ثقافت کو چیلنج کرنے سے قاصر ہیں -


Recent Post

Popular Links