ہندوستان کو ہندو قوم پرست ریاست بننے کے خطرے کا سامنا آج مودی کا ہندوستان وہ ہندوستان نہیں ہے جس سے مجھے پیار ہے:امریکی کانگریس مین کا تجزیہ

RushdaInfotech December 18th 2022 urdu-news-paper
ہندوستان کو ہندو قوم پرست ریاست بننے کے خطرے کا سامنا آج مودی کا ہندوستان وہ ہندوستان نہیں ہے جس سے مجھے پیار ہے:امریکی کانگریس مین کا تجزیہ

واشنگٹن،17دسمبر(ایجنسی)ہندوستان کو ایک ہندو قوم پرست ریاست بننے کے خطرے کا سامنا ہے۔ ایک سبکدوش ہونے والے ڈیموکریٹک کانگریس مین نے گذشتہ روز تقریر کے دوران اپنے شدید اندیشوں کا اظہارِ کیا جنھیں بھارت مخالف رجحان کیلئے جانا جاتا ہے۔امریکی ایوان نمائندگان کے فلور پر اپنی آخری تقریر میں کانگریس مین اینڈی لیون (62)نے اپنے آپ کو زندگی بھر انسانی حقوق کا علمبردار قرار دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ کو انسانی حقوق میں زیادہ کامیابی ملی ہے۔حالانکہ اس کے کئی حصوں میں صورتحال سنگین تھی۔مشی گن سے نویں کانگریشنل ڈسٹرکٹ کی نمائندگی کرنے والے لیون نے الزام لگایا۔”میں ہندوستان جیسی جگہوں پر انسانی حقوق کے لئے آواز اٹھاتا رہا ہوں۔ہندوستان آج دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کی بجائے ہندو قوم پرست ریاست بننے کے خطرے میں ہے۔“اگلی کانگریس میں اس کی نمائندگی ریپبلکن پارٹی کی لیزا میک کلین کریں گی۔خبررساں ایجنسی پی ٹی آئی کے حوالے سے نیو انڈین ایکسپریس نے یہ خبر دیتے ہوے بتایا کہ لیون نے کہا،”میں ہندو مت کا عاشق ہوں، جین مت، بدھ مت اور دیگر مذاہب سے محبت کرنے والا ہوں جو ہندوستان میں پیدا ہوئے ہیں۔ لیکن ہمیں وہاں کے تمام لوگوں کے حقوق کا تحفظ کرنے کی ضرورت ہے۔چاہے وہ مسلمان ہوں، ہندو ہوں، بدھ مت ہوں، یہودی، عیسائی یاجین ہوں۔“ اخبارکے مطابق انہوں نے مصر سمیت کچھ دوسرے ممالک پر بھی روشنی ڈالی جہاں انہوں نے کہا کہ ہزاروں سیاسی قیدی جیلوں میں بند ہیں۔لیون ایوان کی خارجہ امور کی کمیٹی کے رکن ہیں اور ایشیا بحرالکاہل، وسطی ایشیا اور عدم پھیلا ؤکی ذیلی کمیٹی کے نائب سربراہ ہیں۔گذشتہ سال آئی اے ایم سی کے زیر اہتمام کانگریس کی ایک اور بریفنگ کے دوران، لیون نے ہندوستان میں مذہبی آزادی پر تشویش کا اظہار کیاتھا۔انہوں نے کہا، ”آج(وزیر اعظم)نریندر مودی کا ہندوستان وہ ہندوستان نہیں ہے جس سے مجھے پیار ہے۔میں ایک ایسے ملک پر عوامی سطح پر تنقید کیوں کروں گا جس سے میں محبت کرتا ہوں؟ جواب یہ ہے کہ میں ہندوستان سے محبت کرتا ہوں کہ میں اس کے لوگوں پر ان حملوں کو ختم کرنے کے لئے پرعزم ہوں۔ یہ اس لئے ہے کہ میں اپنی حمایت میں بہت پرجوش ہوں۔ متحرک جمہوریت جس کے بارے میں میں نے ایک نوجوان کے طور پر جانا تھا، کہ میں یہ دیکھنا چاہتا ہوں کہ جمہوریت آنے والی نسلوں تک پھلتی پھولتی رہے۔“


Recent Post

Popular Links