اردو زبان کی ترقی میں اردو دان ہی سب سے بڑ ی رکاوٹ انجمن ترقی اردو ہند کرناٹک رام نگر م کے جلسہ میں شرکاء کا اظہار خیال

RushdaInfotech November 25th 2022 urdu-news-paper
اردو زبان کی ترقی میں اردو دان ہی سب سے بڑ ی رکاوٹ  انجمن ترقی اردو ہند کرناٹک رام نگر م کے جلسہ میں شرکاء کا اظہار خیال

رام نگرم۔(غضنفر علی بیگ بابو)بروزجمعرات 24 نومبر 2022 یہاں اردو کی ترقی کے لئے ایک جلسہ منعقد کیا گیا تھا۔ جس میں مہمان خصوصی انجمن اردو ترقی ہند کرناٹک کے صدر عبید اللہ شریف، سکریٹری مبین منور سید ضیاء اللہ کے پی سی سی کے نائب صدر، مولانا اصغر علی، سوکار امجد پاشاہ، صغیر اللہ شاہ رفاعی وغیرہ شریک رہے۔ جلسہ کا آغاز مجیب اللہ مجیب کی قرأت پاک سے ہوا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے عبید اللہ شریف نے تفصیل سے اردو زبان کی حالت پر روشنی ڈالی اورکہا کہ سب سے زیادہ اردو زبان کا نقصان خود اردو دانوں سے ہی ہوا ہے انجمن اردو ترقی ہند کا قیام 1903 میں ہوا، مولانا ابو کلام آزاد نے اس انجمن کی بنیاد رکھی تھی تاکہ اردو زبان کی ترقی ہوسکے اور ملک کے بڑے بڑے دانشورحضرات جس میں ایک بڑی تعداد غیر مسلم برادری کی تھی اس انجمن سے وابستہ رہے۔ ہمارے ملک کی آزادی میں اردو زبان نے بہت بڑا رول ادا کیا ہے جسے آج فراموش کردیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج اردو دان طبقہ احساس کمتری کا شکار ہوچکا ہے جس کی وجہ سے اردو زبان کی ترقی ایک بہت بڑی رکارٹ بن چکی ہے۔ شاید بہت کم لوگوں کو ہی یہ بات معلوم ہو کہ اردو زبان اس دنیا کی بڑی زبان ہے۔ چینی زبان کے بعد دنیا کی سب سے بڑی زبان اردو ہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ جس وقت اس ملک پر انگریزوں کی حکومت تھی اس ملک کی سرکاری زبان اردو ہی تھی۔ ملک کا بٹوارہ کیا ہوا اورجب پاکستان نے اردو کو اپنی قومی زبان کا درجہ دیا۔ اس ملک کے شرپسندوں کو ایک بہت بڑا ہتھیار اردو کے خلاف مل گیا۔سابق وزیر اعظم مسز اندار گاندھی کے دور میں اردو گھر کی بنیاد رکھی گئی، اس وقت اس کی ملکیت دو سو کروڑ سے زیادہ ہے۔ 2021 کی مردم شماری کے مطابق مسلمانوں کی آبادی 21 کروڑ سے زیادہ ہے مگرافسوس کی بات ہے کہ صرف 6 کروڑ لوگوں نے ہی اردو کومادر ی زبان کے طورپر اندراج کرایا ہے۔ حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے سید ضیا ء اللہ نے کہاکہ ہمارے نو جوانوں کو چاہئے کہ ہمارے محلوں کی اردو اسکولوں کی جانب سے زیادہ توجہ دیں۔بچوں کو اردو اسکولوں میں داخلہ کرائیں۔ آج خود ہمارے شہر سے ہی اردو زبان میں تعلیم حاصل کرکے ڈاکٹر س انجینئرس اور یہاں تک کہ آئی اے ایس اور آئی پی ایس افسران بن چکے ہیں۔سکریٹری مبین منور نے کہا کہ ہماری انجمن کو حکومت کی جانب کو کسی بھی قسم کی مالی امداد کی مدد نہیں ملتی اگر ہمارے دل میں اردو کی محبت ہے کہ ہم کو چاہئے کہ زیادہ سے زیادہ اردو زبان کا استعمال کریں، ہمارے جونوانوں کو چاہئے کہ زیادہ سے زیادہ اردو زبان سیکھنے کی کوشش کریں۔


Recent Post

Popular Links