گناہ کرنے سے اللہ تعالیٰ اعمال کی توفیق چھین لیتے ہیں: قاری ولی اللہ شیروانی رحیمی شفا خانہ آمد پر نبیرہ حضرت مسیح الامتؒ کا استقبال

RushdaInfotech November 24th 2022 urdu-news-paper
گناہ کرنے سے اللہ تعالیٰ اعمال کی توفیق چھین لیتے ہیں: قاری ولی اللہ شیروانی  رحیمی شفا خانہ آمد پر نبیرہ حضرت مسیح الامتؒ کا استقبال

بنگلور۔ 23/اکتوبر (راست) انسان کئی مرتبہ گناہوں کا ارتکاب کرتا ہے اس کے باوجود اپنے آپ کو بڑا سالک سمجھ رہا ہوتا ہے، انسان کی حالت تو یہ ہے کہ اسے دوسروں کے بارے میں گناہ کا شک ہو جائے تو وہ ان سے نفرت کرنی شروع کر دیتا ہے اور اپنے عیبوں کا یقین ہوتا ہے لیکن پھر بھی اپنے نفس کے ساتھ محبت کرتا ہے۔ رحیمی شفا خانہ تشریف لائے ہوئے مہمان قاری ولی اللہ شیروانی نبیرہ حضرت مسیح الامتؒ ومہتمم مدرسہ مفتاح العلوم جلال آباد یوپی نے اس خیال کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہاکہ حضرت مسیح الامتؒ فرمایا کرتے تھے کہ انسان گناہ کرنے سے اللہ رب العزت کی نگاہوں سے گر جاتا ہے اور اللہ تعالی اس سے اعمال کی توفیق چھین لیتے ہیں، اور سب سے پہلے جو توفیق چھینتے ہیں وہ یہ ہے کہ اس کو رات کے آخری پہر کی مناجات کی لذت سے محروم کر دیتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ شیطان انسان کی نگاہوں میں گناہوں کو ہلکا کر کے پیش کرتا ہے، یہ اس کا ایک بڑا وار ہے، وہ گناہ کے بارے میں دل میں یہ خیال ڈالتا ہے کہ یہ گناہ تو اکثر لوگ کرتے ہی رہتے ہیں، یہ تو ہو ہی جاتا ہے، اس سے بچنا تو بہت مشکل ہے، آج کل تو بے پردگی بہت عام ہے، اس لئے نگاہوں کو بچانا تو بہت مشکل ہے۔ اس موقع پر مولانا ڈاکٹر حکیم محمد ادریس حبان رحیمیؒ کے جانشین صاحبزادہ ڈاکٹر حکیم محمد فاروق اعظم حبان قاسمی مہتمم دارالعلوم محمدیہ وخانقاہ رحیمی بنگلور نے قاری ولی اللہ شیروانی، قاری انعام الحق کا استقبال کرتے ہوئے آپ کا مکمل تعارف کرایا اور حضرت مسیح الامتؒ اور حضرت حاذق الامت مولانا حکیم محمد زکی الدین صاحب پرنامبٹی کے حالات پر روشنی ڈالی۔ پروگرام کا آغاز تلاوت سے عمل میں آیا، مولانا مفتی محمد سبیل احمد قاسمی خلیفہ ومجاز حضرت حبیب الامتؒ نے مولانا حکیم محمد عثمان حبان دلدار قاسمی کے لکھے ہوئے اشعار حلیہئ مبارکہ صلی اللہ علیہ وسلم کا نذرانہ پیش کیا۔ حکیم محمد عدنان حبان نوادر، نعمت اللہ حمیدی نے آنے والے مہمانوں کی شال وگل پوشی کی اور حافظ محمد محمد امین حبان نے اظہار تشکر پیش کیا۔اس موقع پر بابا جی، مولانا عبدالرب قاسمی، حافظ احمد احمد معین حبان اور دیگر عمائدین موجود تھے۔


Recent Post

Popular Links