بہار میں زہریلی شراب سے اموات اور سی بی آئی کے غلط استعمال پر راجیہ سبھا میں زبردست ہنگامہ

RushdaInfotech December 16th 2022 urdu-news-paper
بہار میں زہریلی شراب سے اموات اور  سی بی آئی کے غلط استعمال پر راجیہ سبھا میں زبردست ہنگامہ

نئی دہلی:15 دسمبر (یو این آئی) بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی طرف سے بہار میں زہریلی شراب کی وجہ سے 40 لوگوں کی موت کا معاملہ اٹھائے جانے اور اپوزیشن پارٹیوں کی طرف سے انفورس منٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) اور مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کے غلط استعمال کامسئلہ اٹھائے جانے، نیز ججوں کی تقرری او ر انتخابات پر بحث کے مطالبے پر جمعرات کے روز راجیہ سبھا میں زبردست ہنگامہ ہوا جس کی وجہ سے صبح ایک گھنٹے کے دوران ایوان کی کارروائی تین بار ملتوی کی گئی۔صبح گیارہ بجے ایوان کے فلور پر ضروری دستاویزات رکھے جانے کے بعد ڈپٹی اسپیکر ہری ونش نے کہا کہ عام آدمی پارٹی کے راگھو چڈھا، کانگریس کے پرمود کمار تیواری اور اکھلیش سنگھ، شیو سینا کی پرینکا چترویدی سمیت کل سات ارکان نے ضابطہ 267 کے تحت ای ڈی اور سی بی آئی کے غلط استعمال، ججوں کی تقرری اور انتخابات پر بحث کے سلسلے میں نوٹس دیا ہے جو چیئرمین کے زیر غور ہے۔ انہوں نے ارکان سے اپیل کی کہ وہ ایوان کو چلانے میں تعاون کریں۔ترنمول کانگریس کے ڈیرک اوبرائن نے قواعد کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ پہلے اس طرح کے نوٹس پر بات کرنے کی اجازت دی گئی تھی۔مسٹر پرمود تیواری نے کہا کہ آج ایوان کے سامنے درج کاموں کو معطل کرکے عوامی اہمیت کے موضوعات پر بحث کی جانی چاہئے۔ ای ڈی اور سی بی آئی کا غلط استعمال ہو رہا ہے۔ محترمہ پرینکا چترویدی نے کہا کہ یہ ایوان ریاستوں کا ہے اور انہوں نے جو مسائل دیئے ہیں وہ فوری اہمیت کے حامل ہیں۔ اس لیے پہلے ان پر بحث ہونی چاہیے۔ قائد ایوان پیوش گوئل نے محترمہ چترویدی کے بیان کی مخالفت کی۔ محنت اور روزگار کے وزیر بھوپیندر یادو نے کہا کہ اراکین کسی بھی معاملے پر قواعد کا حوالہ دے سکتے ہیں، لیکن حتمی فیصلہ چیئرمین ہی کریں گے۔ ڈپٹی اسپیکر مسٹر ہری ونش نے کہا کہ چیئرمین نے مذکورہ مسائل پر رضامندی نہیں دی ہے، اس لیے ان موضوعات پر بات نہیں کی جاسکتی ہے۔ اس کے بعد بی جے پی کے ارکان اپنی نشستوں کے قریب کھڑے ہو گئے اور اونچی آواز میں بولنے لگے۔ اس دوران وقفہ صفر کا اعلان کیا گیا۔ اس کے بعد اپوزیشن پارٹیوں کے ارکان اپنی نشستوں پر کھڑے ہو گئے اور شور مچانا شروع کر دیا۔ ہنگامہ بڑھنے پر ایوان کی کارروائی 11 بج کر 20 منٹ پر 15 منٹ کیلئے ملتوی کر دی گئی۔ایوان کا اجلاس دوسری مرتبہ شروع ہوا تو دونوں جانب سے ہنگامہ آرائی جاری رہی۔ ڈپٹی اسپیکر نے دونوں فریقوں سے ایوان کی کارروائی جاری رکھنے کی استدعا کی تاہم ایک منٹ کے اندر ہی اجلاس دوبارہ 15 منٹ کیلئے ملتوی کر دیا گیا۔تیسری بار کارروائی شروع ہوئی تب بھی دونوں طرف سے ہنگامہ آرائی جاری رہی۔ پریزائڈنگ چیئرمین بھونیشور کلیتا نے وقفہ صفر کیلئے بی جے پی کے وپلب دیو کا نام پکارا۔ مسٹر وپلب دیو نے کہا کہ بہار میں زہریلی شراب کی وجہ سے 40 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ راشٹریہ جنتا دل کے منوج کمار جھا اس دوران ضابطہ کا معاملہ اٹھانا چاہتے تھے لیکن اجازت نہیں دی گئی۔اس کے فوراً بعد کانگریس ارکان ایوان کے بیچ میں آگئے اور ہنگامہ آرائی اور نعرے بازی شروع کردی۔ 12 بجے سے دو منٹ قبل ارکان کے خاموش نہ ہونے پر ایوان کا اجلاس 12 بجے تک ملتوی کردیا گیا۔


Recent Post

Popular Links