مرکزی جمعیت ابنائے قدیم جامعہ دارالسلام عمر آباد کا رحیم آباد میں ایک روزہ تربیتی وتذکیری اجلاس

RushdaInfotech December 11th 2022 urdu-news-paper
مرکزی جمعیت ابنائے قدیم جامعہ دارالسلام عمر آباد کا  رحیم آباد میں ایک روزہ تربیتی وتذکیری اجلاس

رحیم آباد۔10دسمبر(راست) بروز جمعرات جمعیت ابنائے قدیم جامعہ دارالسلام عمر آباد شاخ رحیم آباد، ہسورو ضلع بنگلور کا مشترکہ اجلاس رحیم آباد کے وسیع کیمپس میں صدر مرکزی جمعیت ابنائے قدیم عمر آباد کے مولانا کا کا سعید احمد عمری کی صدارت میں منعقد ہوا۔تلاوت کلام پاک سے پروگرام کا آغاز ہوا۔ پروگرام کی نظامت حافظ عبدالرحمن خان عمری صدر ابنائے قدیم شاخ رحیم آباد نے کی۔حافظ خلیل الرحمن خان عمری نے پروگرام کا استقبالیہ پیش کیا۔ اس کے بعد کاکا انیس عمری کے ذریعہ اجلاس کا پہلا خطاب ہوا۔ انہوں نے اپنے خطاب میں ابنائے قدیم عمر آباد کے اغراض ومقاصد کی طرف حاضرین ابنائے قدیم کو خاص توجہ دلائی اور بتایا کہ ابنائے قدیم کو اصلاح نفس کی طرف خاص توجہ دینا ہے، اس کے بعدحافظ عبدالعظیم عمری مدنی نے ”معاملات کا مثالی تصور“ کے عنوان سے ابنائے قدیم کو بڑے پرکشش انداز میں خطاب کیا اور ابنائے قدیم کو موقع ومناسبت کے لحاظ سے یاد دلایا کہ آدمی کے تقویٰ کی اصل پہچان اس کے صحیح معاملات سے ہوتی ہے۔ آدمی منافق بنتا ہے اپنے داغدار معاملات سے اور اللہ تعالیٰ کو معاملات کی خرابی سخت ناپسند ہے۔ لہٰذا لوگوں کے ساتھ معاملات کو صاف ستھرا بنائیں اور اچھے معاملات کی بنیاد پر جنت کے حق دار بنیں۔اس کے بعد مفتی کلیم اللہ عمری نے ”مداومت عمل“ کے عنوان سے ابنائے قدیم کو خطاب کیا اور ابنائے قدیم کو بہت ساری مثالوں کے ذریعہ ابنائے قدیم کے اغراض ومقاصدپر زور دیتے ہوئے مداومت عمل کی تلقین کی۔ اس کے بعد ”ہماری خدمتوں کا محور رضائے الٰہی“ کے عنوان پر مولانا سراج الدین عمری نے خطاب کیا۔واضح رہے کہ ابنائے قدیم کے اس تربیتی وتذکیری پروگرام میں جامعہ دارالسلام عمرآباد کے علماء کرام حافظ محمد ابراہیم عمری معتمد عمومی، دکتور الیاس عمری اعظمی، مولانا عبدالقدیر عمری، مولانا عبدالحسیب عمری مدنی، مولانا احمد سراج عمری، مولانا عبدالمتین عمری سکریٹری جمعیت ابنائے قدیم شاخ بنگلور کے علاوہ رحیم آباد کے اساتذہ کرام نیز جمعیت ابنائے قدیم عمرآباد قرب وجوار کے عمری برادران واہلیان رحیم آباد اس اجلاس میں شریک رہے۔


Recent Post

Popular Links