بنگلورو سمیت کرناٹک میں بھی متعدد مقامات پرپی ایف آئی اور ایس ڈی پی آئی کے دفاتر پر چھاپے،19/ افراد گرفتار

RushdaInfotech September 23rd 2022 urdu-news-paper
بنگلورو سمیت کرناٹک میں بھی متعدد مقامات پرپی ایف آئی اور ایس ڈی پی آئی کے دفاتر پر چھاپے،19/ افراد گرفتار

بنگلورو:22ستمبر(سالار نیوز)پاپولر فرنٹ آف انڈیا (پی ایف آئی) پر غیر قانونی سرگرمیوں میں شامل رہنے اور دہشت گردانہ تنظیموں سے تعلقات کے الزام میں چلائی گئی ملک گیر مہم کے حصہ کے طور پر بنگلورو سمیت ریاست بھر میں اس کے دفاتر پر چھاپے مارے اور بنگلور میں پی ایف آئی سے جڑے دفاتر اور عہدیداروں کے ٹھکانوں پر چھاپے مارے اور اس سلسلہ میں منصور خان، یاسر پاشاہ اور دیگر 19/افراد کو گرفتار کر لیا اور اس ضمن میں شہر کے کے جی ہلی پولیس تھانے میں ایک شکایت درج کروائی گئی ہے۔ ایک پولیس عہدیدار نے بتایا کہ پولیس حکام کو یہ اطلاع ملی تھی کہ یہ تنظیم ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث ہے، اس لئے کے جی ہلی اور گووند پور پولیس تھانوں کی حدود میں چھاپے مارے گئے اور ان کے دفاتر کا معائنہ کر کے ان پر مہر لگادی گئی۔ شہر کی پولیس کی کارروائی ملک گیر پیمانے پر پی ایف آئی کے خلاف این آئی اے کے چھاپوں سے جڑی رہی۔ افسروں کے مطابق شہر میں پلی کیشی نگر اور دیگر مقامات پر این آئی اے، بنگلورو سٹی پولیس، سی سی بی اور دیگر ٹیموں نے متعدد مقامات پر چھاپے مارے۔ افسرو ں نے بتایا کہ ریاست کے دیگر اضلاع میں بھی چھاپے مارنے کی کارروائی کی گئی۔ ریاستی وزیر داخلہ ارگا گیانیندرا نے ان چھاپوں کے بارے میں اپنا بیان دیتے ہوئے کہاکہ پی ایف آئی، ایس ڈی پی آئی کے ٹھکانوں پر این آئی اے اور پولیس نے ان مصدقہ اطلاعات کے بعد چھاپے مارے ہیں کہ ملک کی سلامتی اور یکجہتی کو نقصان پہنچانے کی کوششوں کے پیچھے ان تنظیموں کا ہاتھ ہے۔شیموگہ میں اس سلسلہ میں پولیس کی طرف سے کی گئی کارروائی کو سراہتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ اس کارروائی سے خونریزی کو روکا گیا۔ ان چھاپوں کے خلاف پی ایف آئی کارکنوں کے احتجاج پروزیر داخلہ نے کہا کہ ایسے مرحلہ میں احتجاج درست نہیں۔ انہوں نے کہا کہ پی ایف آئی اور ایس ڈی پی آئی پر مستقل پابندی لگانے کیلئے مرکزی حکومت کی طرف سے کارروائی شروع کی جا چکی ہے۔


Recent Post

Popular Links