PFIپر مودی حکومت کی یلغار 15ریاستوں میں 93مقامات پر چھاپے،106/افرادگرفتار میسوراورمنگلورسمیت کئی ریاستوں میں سڑکوں پر نکلے پی ایف آئی کارکن،کیرلامیں آج بندکا اعلان

RushdaInfotech September 23rd 2022 urdu-news-paper
PFIپر مودی حکومت کی یلغار 15ریاستوں میں 93مقامات پر چھاپے،106/افرادگرفتار میسوراورمنگلورسمیت کئی ریاستوں میں سڑکوں پر نکلے پی ایف آئی کارکن،کیرلامیں آج بندکا اعلان

نئی دہلی:22ستمبر(ایجنسی)قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے)نے جمعرات کی آدھی رات سے 15ریاستوں میں پاپولر فرنٹ آف انڈیا (پی ایف آئی)کے 93مقامات پر چھاپے مارے، جو اب تک جاری ہیں۔ ٹیرر فنڈنگ کیس میں کی جارہی اس کارروائی میں پی ایف آئی کے 106/ارکان کو گرفتار بھی کیا گیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق تنظیم کے سربراہ اوما سلام بھی گرفتار ہونے والوں میں شامل ہیں۔تلاشی مہم میں این آئی اے کے 300/افسر شامل تھے۔ این آئی اے ذرائع نے بتایا کہ 5معاملات میں 45لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ ایجنسی کے دعوے کے مطابق پی ایف آئی کے یہ رہنما، دہشت گردی اور دہشت گردانہ سرگرمیوں کیلئے پیسے دینے والے، ہتھیار استعمال کرنے کی تربیت دینے والے لوگ ہیں۔ یہ لوگوں کو کالعدم تنظیموں میں شامل ہونے کیلئے بنیاد پرست بناتے تھے۔این آئی اے اور ای ڈی کی یہ کارروائی اتر پردیش، کیرلا، کرناٹک، آندھرا پردیش، تلنگانہ، تمل ناڈو، آسام، مہاراشٹر، بہار، مغربی بنگال، مدھیہ پردیش، پڈوچیری اور راجستھان میں جاری ہے۔ یہاں، کارروائی کے درمیان، وزیر داخلہ امیت شاہ کی صدارت میں وزارت داخلہ میں ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ ہوئی۔ میٹنگ میں این ایس اے اجیت ڈوبھال، ہوم سکریٹری اجے بھلا اور این آئی اے کے ڈائریکٹر جنرل موجود تھے۔
پی ایف آئی کے کارکن سڑکوں پر:کیرلا کے ملاپورم، تمل ناڈو میں چنئی، کرناٹک کے منگلوروومیسور میں این آئی اے اور ای ڈی کے چھاپوں کے خلاف پی ا یف آئی کے کارکنوں نے سڑکوں پر نکل کر زبردست احتجاج کرنا شروع کردیاہے۔ کیرلا میں کارکنوں نے سڑک بلاک کر دی جسے ہٹانے کیلئے پولیس نے طاقت کا استعمال کیا۔یہاں پی ایف آئی نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ آواز کو دبانے کیلئے یہ کارروائی کی جا رہی ہے۔ مرکزی ایجنسی ہمیں ہراساں کر رہی ہے۔ پی ایف آئینے جمعہ کو کیرلا میں ایک روزہ ہڑتال کی کال دی ہے۔
پی ایف آئی کا نام 2 بڑے تنازعات میں آیا
1:جولائی میں پٹنہ پولیس نے پھلواری شریف میں چھاپہ مار کر دہشت گردی کی سازش کا پردہ فاش کیا تھا۔ انکشافات کے مطابق دہشت گردوں کا نشانہ وزیر اعظم نریندر مودی تھے۔ ستمبر میں، اس معاملے میں پی ایف آئی کارکنوں کے نام سامنے آنے کے بعد این آئی اے نے بہار میں چھاپے مارے تھے۔
2:حجاب کا تنازع اس سال کے شروع میں کرناٹک کے اڈپی میں شروع ہوا تھا۔ کرناٹک حکومت کے مطابق اس تنازع کے پیچھے پی ایف آئی کارکن بھی تھے۔ حکومت نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ پی ایف آئی کی سازش کی وجہ سے کرناٹک میں حجاب کا تنازعہ کھڑا ہوا۔


Recent Post

Popular Links