شیو سینا میں بغاوت:مہاراشٹرا کی ادھو ٹھاکرے حکومت بحران کا شکار شیو سینا کے22اراکین اسمبلی راتوں رات سورت منتقل، باغی لیڈر ایکناتھ شندے کو وزیر اعلیٰ بنانے ادھو کی پیش کش؟

RushdaInfotech June 22nd 2022 urdu-news-paper
شیو سینا میں بغاوت:مہاراشٹرا کی ادھو ٹھاکرے حکومت بحران کا شکار شیو سینا کے22اراکین اسمبلی راتوں رات سورت منتقل، باغی لیڈر ایکناتھ شندے کو وزیر اعلیٰ بنانے ادھو کی پیش کش؟

ممبئی-21جون(ایجنسی) مہاراشٹر میں ایم وی اے کی حکومت بحران کا شکار ہوگئی ہے- رپورٹ کے مطابق ادھو ٹھاکرے حکومت کے 11 وزر اء اور چند اراکین اسمبلی باغی ہو چکے ہیں - رپورٹ کے مطابق شیو سینا کے رہنما اور ریاست کے شہری ترقی کے وزیر ایکناتھ شندے اور30 سے زیادہ ایم ایل اے نے شیو سینا کی قیادت کے خلاف بغاوت کردی ہے اور انہوں نے گجرات کے سورت شہر کا رخ کیا اور تمام کے تمام یہاں کے ایک ریسارٹ میں رکھے گئے ہیں - پیر کو قانون ساز کونسل انتخابات کے بعد سے رابطہ نہ ہونے کے بعد منگل کو ضروری میٹنگ طلب کی -قانون ساز کونسل کے انتخابات میں شیوسینا کے کچھ ایم ایل ایز کی طرف سے کراس ووٹنگ کے الزامات کے درمیان یہ بات سامنے آئی ہے- شیو سینا کے اراکین اسمبلی کے اچانک غائب ہونے کے باعث بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)کے حق میں کراس ووٹنگ کے تعلق سے مہاراشٹر میں جاری سیاسی اتھل پتھل مانا جا رہا ہے-بی جے پی نے ایم ایل سی الیکشن میں پانچ سیٹیں جیتی ہیں، جس میں شیوسینا اور نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کو دو دو سیٹیں ملی ہیں - وہیں تعداد کم ہونے کے باوجود بی جے پی انتخابات میں بڑی جیت حاصل کرنے میں کامیاب رہی-مہاراشٹرا اسمبلی میں بی جے پی کے 106 ایم ایل اے ہیں، جبکہ ان کے امیدواروں کے لیے باقی ووٹ یا تو آزادایم ایل اے سے آئے ہیں، یا چھوٹی پارٹیوں یا دیگر پارٹیوں کے ہیں - ٹھاکرے نے آج دوپہر تمام پارٹی ایم ایل ایز کی ایک ضروری میٹنگ بلائی ہے-
مہاراشٹرا حکومت کو کوئی خطرہ نہیں:شرد پوار:اس دوران نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) کے صدر شرد پوار نے منگل کو کہا کہ مہاراشٹرا میں مہا وکاس اگھاڑی حکومت کو کوئی خطرہ نہیں ہے اور یہ تیسری بار ہے کہ ریاستی حکومت کو گرانے کی سازش کی گئی ہے، لیکن یہ کامیاب نہیں ہو گی-مسٹر پوار نے یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ شیوسینا کے کچھ ممبران اسمبلی کی ناراضگی ان کی پارٹی کا اندرونی معاملہ ہے - انہوں نے کہا کہ ان کی کسی سے بات نہیں ہوئی- انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر ادھو ٹھاکرے شیو سینا ممبران اسمبلی کی ناراضگی کا معاملہ سنبھال لیں گے - ڈھائی سال سے حکومت ٹھیک چل رہی ہے - شیوسینا کے ساتھ این سی پی اور کانگریس پارٹی ہے -انہوں نے کہا کہ این سی پی میں کوئی بغاوت نہیں ہے - مسٹر پوار نے کہا کہ ماضی میں بھی راجیہ سبھا اور قانون ساز کونسل کے انتخابات میں کراس ووٹنگ ہوئی ہے - اس سے ریاستی حکومت کے مستقبل پر کوئی فرق نہیں پڑے گا-خیال رہے کہ شیوسینا کے سینئر لیڈر ایکناتھ شندے کی قیادت میں پارٹی کے کچھ ناراض ایم ایل اے اس وقت گجرات کے سورت میں جمع ہیں اور ایسی خبریں آئی ہیں کہ وہ پارٹی قیادت سے ناراض ہیں -
ادھوکے استعفے کی پیش کش: شیوسینا کے صدر ادھو ٹھاکرے نے مہاراشٹرا کی سیاست میں ابھرتے ہوئے سیاسی بحران کے درمیان منگل کو ہونے والی قانون ساز پارٹی کی میٹنگ میں وزیر اعلیٰ کا عہدہ چھوڑنے کا اشارہ دیا - انہوں نے میٹنگ میں شیوڑی کے رکن اسمبلی اجے چودھری کو لیجسلیچر پارٹی کا لیڈر مقرر کیا - ادھو ٹھاکرے نے رکن اسمبلی ایکناتھ شندے کو وزیر اعلیٰ کے عہدے کی پیشکش کی ہے-مہاراشٹرا میں سیاسی بحران کے درمیان وزیراعلیٰ نے آج شیوسینا کے تمام ممبران پارلیمنٹ، اراکین اسمبلی اور عہدیداروں کی میٹنگ بلائی- ادھو ٹھاکرے کی زیر صدارت شیوسینا لیجسلیچر پارٹی کی میٹنگ میں 56 میں سے صرف 28 اراکین اسمبلی نے شرکت کی- میٹنگ میں ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ ڈھائی سال پہلے جب مہاوکاس اگھاڑی کی حکومت بنی تھی تو وہ کچھ خاص وجوہات کی وجہ سے وزیر اعلیٰ بنے تھے- وہ اسی مقصد کے لئے وزیر اعلیٰ کا عہدہ چھوڑنے کو تیار ہیں -دریں اثنا شیوسینا کے ایکناتھ شندے اپنے حامی اراکین اسمبلی کے ساتھ گجرات کے سورت میں لی میریڈین ہوٹل میں ٹھہرے ہوئے ہیں - شندے نے ٹویٹ کرکے کہا ہے کہ وہ بال ٹھاکرے کے کٹر شیوسینک ہیں - شیوسینا کے زیادہ تر اراکین اسمبلی مہاوکاس اگھاڑی حکومت سے ناراض ہیں -قانون ساز کونسل کے انتخابات کے بعد ریاست میں سیاسی بحران مزید گہرا ہوگیا ہے- شیوسینا کے ایم ایل اے ایکناتھ شندے نے اپنی ہی پارٹی سے بغاوت کر دی ہے- وزیر اعلیٰ تعطل کو ختم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن شیوسینا میں بغاوت کا اثر ریاست کی مہا وکاس اگھاڑی پر نظر آنے لگا ہے- شیوسینا کی میٹنگ میں اراکین اسمبلی نے غداروں کو سبق سکھانے کی بات بھی کی-
مہاراشٹر میں کانگریس کے کمل ناتھ آبزرور:کانگریس نے منگل کو پارٹی کے سینئر لیڈر کمل ناتھ کو مہاراشٹر میں مبصر مقرر کیا ہے -کانگریس نے یہ قدم مہاراشٹر میں سیاسی بحران کے دوران اٹھایا ہے - شیو سینا-نیشنلسٹ کانگریس پارٹی-کانگریس حکومت کو سینئر ریاستی وزیر ایکناتھ شنڈے سمیت شیوسینا کے کچھ دیگر ایم ایل اے کی مبینہ بغاوت کے نتیجے میں ایک بڑے سیاسی بحران کا سامنا ہے -یہ پیشرفت شیوسینا کے کچھ ایم ایل اے کی طرف سے اسمبلی میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے حق میں کراس ووٹنگ کے الزامات کے درمیان سامنے آئی ہے - بتایا جاتا ہے کہ یہ ایم ایل اے اس وقت گجرات کے سورت میں مسٹر شنڈے کے ساتھ ہیں -
ایکناتھ شندے برطرف:تھانے میں شیوسینا کے لیڈراور وزیرایکناتھ شندے کو شیوسینا کے لیڈر کے عہدہ سے ہٹادیاگیا- انہوں نے کہاہے کہ کانگریس اور این سی پی سے اتحاد نہیں چل رہا ہے -شیوسینا کے ایم پی اورترجمان سنجے راوت نے اس بحران کو خطرہ قرار نہیں دیا ہے بلکہ بی جے پی ایم وی اے حکومت کو گرانے کی سازش رچ رہی ہے -
شیوسینا نہیں چھوڑوں گا:شندے:مہاراشٹر میں شیوسینا لیجسلیچر پارٹی میں بغاوت کی قیادت کر رہے لیڈر ایکناتھ شندے نے منگل کو کہا کہ وہ پارٹی کے بانی بالا صاحب ٹھاکرے کے پکے شیو سینک ہیں -انہوں نے منگل کی دوپہر تقریباً 2.30 بجے ٹویٹر پر ایک بیان میں کہاکہ ہم بالا صاحب کے پکے شیوسینک ہیں -بالاصاحب نے ہمیں ہندوتوا سکھایا ہے - اقتدار کے لئے ہم نے بالاصاحب کے نظریات اور دھرم ویر آنند دیدھے صاحب کی تعلیمات کو کبھی دھوکہ نہیں دیا اور نہ کبھی دھوکہ دیں گے -


Recent Post

Popular Links