روایتی طرز علاج کے ذریعے احتیاط اور علاج: شہر میں دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس، بیرون ممالک کے مہمانوں کی شرکت

RushdaInfotech June 21st 2022 urdu-news-paper
روایتی طرز علاج کے ذریعے احتیاط اور علاج: شہر میں دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس، بیرون ممالک کے مہمانوں کی شرکت

بنگلور: 20 جون (راست) ہولسٹک میڈیسن اینڈ ریسرچ فاؤنڈیشن (ایچ ایم آر ایف) کی زیر نگرانی بروز ہفتہ اور اتوار 19,18 جون 2022 کو شہر کے ڈاکٹر امبیڈکر بھون میں دو روزہ سکینڈ ورلڈ کانفرنس آن ٹریڈیشنل میڈیسن کی ایک کانفرنس منعقد ہوئی جس میں ملک کے ماہر آیوش میڈیسن ٹریڈیشنل پریکٹیشنرز کے علاوہ بیرونی چار ملکوں سری لنکا، قزاقستان، کینیڈا اور سوئٹرزرلینڈ کے آیوش ماہرین موجود تھے۔ اس کانفرنس کا مقصد یہ تھاکہ ساری دنیا میں صحت سے متعلق نئی دوائیں اور ان پر ریسرچ کتنی ہوئی ہے، اس کے سائنٹفک پیپرس پریزنٹیشن کئے جائیں،دو روزہ کانفرنس کے پہلے دن آکیوپنکچر سے متعلق ایک سیمینار شہر کے آر ٹی نگر میں منعقد کیاگیا، جہاں ڈاکٹر سمیع اللہ اور ڈاکٹر دیپک راوت نے آکیوپنکچر پر تفصیلی خطاب کیا، دوسرے دن صبح آٹھ بجے ودھان سودھا سے لے کر امبیڈکر بھون تک ایک ریلی نکالی گئی جس کے ذریعہ عوام میں یہ بیداری لائی گئی کہ اچھی صحت کیلئے شکر اور نمک کا استعمال کم سے کم کیا جائے، کیوں کہ یہ دونوں ہی ”سفید زہر“ یعنی وہائٹ پوائزن میں شمار کئے جاتے ہیں، دس بجے سے امبیڈکر بھون میں سائنٹفک پیپر کا پریزنٹیشن شروع ہوا، یہ کانفرنس صبح دس بجے سے رات آٹھ بجے تک چلتی رہی، عوام الناس کی کثیر تعداد اس میں شریک تھی۔ دوسرے دن وزیر صحت ڈاکٹر سدھاکرنے کانفرنس کا آغاز کیا اور ڈاکٹر سمیع اللہ اور دیپ راوت کی آکیوپنکچر پر لکھی ہوئی دو کتابوں کا اجراء عمل میں لایا، اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر سدھاکر نے کہا کہ روایتی طرز علاج کی طرح آپ بھی آیوش میڈیسن کو صف اول کی میڈیسن بنا سکتے ہیں، اس کے لئے صرف کانفرنسیں، یا لوگوں میں بیداری لانا کافی نہیں ہے، اس کیلئے باقاعدہ ڈاکیومنٹیشن بنانے کی ضرورت ہے، انسان سن کر نہیں بلکہ دیکھ کر سمجھتا ہے، ڈاکیومنٹیشن اس سلسلے میں انتہائی فائدہ مندثابت ہوگا، وزیراعظم نے بھی آیوش سسٹم کو عام کرنے کیلئے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف آیورویدا کے نام سے باقاعدہ ایک ادارہ قائم کیا ہے۔ڈاکٹر سمیع اللہ نے سائنٹفک پیپر پیش کرکے پریزنٹیشن پیش کیا اور اپنے خطاب میں آیوش سسٹم پر تفصیل سے روشنی ڈالی، قزاقستان سے آئی ہوئی ڈاکٹر تاتیانہ ماؤل (چانسلر الفارابی، قزاک نیشنل یونیورسٹی) نے اپنے خطاب میں کہا کہ قزاقستان اور ایچ ایم آر ایف کے اشتراک سے انڈو۔ قزاقستان مل کرآئندہ آیوش سسٹم کو ساری دنیا میں پھیلانے اور اس پر مزید بہتری کیلئے کام کریں گے۔کینیڈا، سری لنکا اور سوئٹزر لینڈ سے تشریف لائے مہمانوں نے بھی پیپر پریزنٹ کیا ۔ آج 21 جون بروز منگل کو یوگا ڈے کے انعقاد کے بعد یہ کانفرنس اپنے اختتام کو پہنچے گی۔


Recent Post

Popular Links