بنگلور کے سامنے جوس بٹلر کو روکنے کا چیلنج

RushdaInfotech April 26th 2022 urdu-news-paper
بنگلور کے سامنے جوس بٹلر کو روکنے کا چیلنج

پونے، 25اپریل (یو این آئی) رائل چیلنجرز بنگلور اور راجستھان رائلز کے درمیان منگل کو ہونے والے آئی پی ایل میچ میں راجستھان کے جوس بٹلر کو روکنا بنگلور کے سامنے سب سے بڑا چیلنج ہوگا۔بٹلر اس وقت شاندار فارم میں ہیں۔ بٹلر اس سیزن میں سب سے زیادہ 491 رنز بنانے والے کھلاڑی ہیں۔ بٹلر نے یہ رن 81.83کی اوسط اور 161.51کی اسٹرائیک سے بنائے ہیں۔ پچھلے آٹھ آئی پی ایل میچوں میں بٹلر کے نام چار سنچریاں ہیں۔ ایم سی اے کے میدان میں بھی ان کا ریکارڈ شاندار رہا ہے۔ بٹلر نے یہاں پانچ ٹی20میچوں میں 51.66کی اوسط اور 161.96کے اسٹرائیک ریٹ سے 155رنز بنائے ہیں۔بٹلر 2016کے سیزن میں ہندوستان کے سابق کپتان وراٹ کوہلی کی چار سنچریاں بنانے کے ریکارڈ کی برابری کرنے کے راستے پر گامزن ہیں۔ بٹلر جس فارم سے کھیل رہے ہیں اسے دیکھ کر ان کے لئے یہ کام مشکل نہیں لگتا۔ اگر بنگلورو بٹلر کے بڑھتے ہوئے قدموں کو نہیں روکتا تو اس کی حالت بھی وہی ہوگی جو راجستھان کے آخری میچ میں دہلی کی تھی۔بنگلورو کے تیز گیند باز جوش ہیزل ووڈ کے پاس بٹلر کو روکنے کی طاقت ہے۔ ہیزل ووڈ اب تک کے سیزن میں رائل چیلنجرز بنگلور کے لیے بہترین گیند باز ثابت ہوئے ہیں۔ انہوں نے چار میچوں میں 11.2کے شاندار اسٹرائیک ریٹ سے آٹھ وکٹیں حاصل کیں۔ آئی پی ایل 2021سے اب تک، انہوں نے ڈیتھ اوورز میں اچھی گیندبازی کرتے ہوئے نو میچوں میں 8.40کی اکانومی سے 7وکٹیں حاصل کی ہیں۔ بنگلورو کی ٹیم اپنا آخری میچ سن رائزرز حیدرآباد کے خلاف صرف 68رنز پر آوٹ ہونے کے بعد نو وکٹوں سے ہار گئی تھی۔ اب دیکھنا یہ ہوگا کہ بنگلور کی ٹیم اس بڑی شکست کے بعد اس میچ میں کس طرح واپسی کرتی ہے ہے۔راجستھان کے لیگ اسپنر یوزویندر چہل اس سیزن میں بلے بازوں پر زبردست دباؤ بنارہے ہیں۔ سات میچوں میں انہوں نے 11.33کے شاندار اسٹرائیک ریٹ سے 18وکٹیں حاصل کیں۔ ایک طرف اورینج کیپ ان کے ساتھی بٹلر کے پاس جبکہ پرپل کیپ یوزویندر کے پاس ہے۔ ڈیتھ اوورز میں بھی چہل اس سیزن کے سب سے کامیاب اسپنر ہیں۔ انہوں نے 7.75کی اکانومی کے ساتھ 24گیندوں میں 5بار بلے بازوں کو اپنا شکار بنایاہے۔اسی سیزن میں جب وہ اپنی پرانی فرنچائزی آر سی بی کے خلاف کھیلے تو انہوں نے 15رن دے کر دو وکٹیں حاصل کیں۔اگرچہ اس سیزن میں جوس بٹلر ہی توجہ کا مرکز رہے ہیں لیکن راجستھان کے کپتان سنجو سیمسن نے بھی شاندار بلے بازی کا مظاہرہ کیا ہے۔
انہوں نے سات اننگز میں 171.79کے اسٹرائیک ریٹ سے 201رنز بنائے ہیں۔ ایم سی اے اسٹیڈیم میں کھیلے گئے اپنے آخری چار میچوں میں سیمسن نے ایک بار سنچری اور ایک نصف سنچری بنائی ہے۔راجستھان کے تیزگیندباز پرسدھ کرشنا نے ایک ایسے میچ جس میں جس میں مجموعی طور پر 429رنز بنے، میں صرف چار اوورز میں 22رنز دیے بلکہ ایک میچ میں تین بلے بازوں کو بھی اپنا شکار بنایا۔ پرسدھ نے سات میچوں میں 8.14کی اکانومی سے آٹھ مرتبہ بلے بازوں کو پویلین کی راہ دکھاکر مضبوط کیا ہے۔ نوجوان بلے باز دیو دت پڈیکل اس سیزن میں اب تک اپنی کارکردگی میں تسلسل دکھا رہے ہیں۔ انہوں نے سات میں سے پانچ میچوں میں 20سے زیادہ رنز بنائے ہیں۔ انہوں نے آر سی بی کے خلاف آخری میچ میں 29گیندوں میں 37رنز بنائے تھے جبکہ ایم سی اے میں کھیلے گئے اپنے پچھلے میچ میں انہوں نے 29گیندوں میں 41رنز بنائے تھے۔


Recent Post

Popular Links