دھرم سنسدمعاملہ: مسلح افواج کے3ریٹائرڈ افسرپہنچے سپریم کورٹ تحقیقات کیلئے ایس آئی ٹی تشکیل دینے کا مطالبہ

RushdaInfotech January 17th 2022 urdu-news-paper
دھرم سنسدمعاملہ: مسلح افواج کے3ریٹائرڈ افسرپہنچے سپریم کورٹ  تحقیقات کیلئے ایس آئی ٹی تشکیل دینے کا مطالبہ

نئی دہلی-16جنوری(ایجنسی)ہندوستانی مسلح افواج کے 3ریٹائرڈ افسروں نے سپریم کورٹ میں ایک رٹ پٹیشن دائر کی ہے، جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ ہری دوار اور دہلی کے دھرم سنسدوں میں مسلمانوں کے خلاف ہیٹ اسپیچ کی جانچ کیلئے ایس آئی ٹی کی تشکیل کی جائے-ان درخواست گزاروں کے نام میجر جنرل ایس جی وومبٹکرے، کرنل پی کے نائر اور میجر پریہ درشی چودھری ہیں -عرضی میں کہا گیا ہے کہ سیڈیشن اورتفرقہ انگیز بیانات نے نہ صرف ملک کے فوجداری قانون کی خلاف ورزی کی ہے بلکہ ہندوستانی آئین کے آرٹیکل19پر بھی حملہ کیا ہے- یہ بیان ملک کے سکیولر تانے بانے کو داغدار کرتے ہیں اور امن عامہ کو متاثر کرنے کے شدید امکان رکھتے ہیں -درخواست گزاروں نے کہا ہے کہ اگر اس طرح کے واقعات پر توجہ نہ دی گئی تو اس سے مسلح افواج کے جوانوں کے حوصلے، اتحاد اور سا لمیت پر سنگین اثرات مرتب ہو سکتے ہیں، کیونکہ ان کا تعلق مختلف برادریوں اور مذاہب سے ہے-درخواست گزاروں نے اس امر کی جانب بھی توجہ مبذول کرائی ہے کہ اس طرح کی نفرت انگیز باتیں ہماری فوج کی لڑنے کی صلاحیت کو بھی شدید طور پرمتاثر کر سکتی ہیں، جس کے ردعمل میں قومی سلامتی سے سمجھوتہ کیا جائے گا-درخواست میں دہلی اور ہری دوار کے دھرم سنسدوں میں کہی گئی ان باتوں کا بھی حوالہ دیا گیا ہے، جن میں مبینہ طور پر مسلمانوں کے قتل عام کی اپیل کرتے ہوئے ملک کی پولیس، سیاست دانوں، فوج اور ہر ہندو سے مسلمانوں کے خلاف ہتھیار اٹھانے کی اپیل کی گئی تھی-عرضی میں کہا گیا ہے کہ، اس طرح کے غیر آئینی اور سطحی کردار کے غیرمہذب بیان شاید آزادی سے پہلے کے ہندوستان کے بعد سے کھلے عام نہیں دیے گئے ہیں -اس سے پہلے10جنوری کو سپریم کورٹ اس پی آئی ایل کی عرضی پر شنوائی کیلئے تیار ہوگئی تھی، جس میں ہری دوار دھرم سنسد میں ہیٹ اسپیچ کے ملزموں کے خلاف کارروائی کی مانگ کی گئی تھی- چیف جسٹس این وی رمن کی سربراہی والی بنچ کے سامنے عرضی داخل کرنے والے سینئر وکیل کپل سبل نے کہا تھا کہ ایف آئی آر درج ہونے کے باوجود معاملے میں کوئی گرفتاری نہیں ہوئی ہے-فوج کے ان تین ریٹائرڈ افسروں کی عرضی میں ملزموں کی گرفتاری نہ ہونے کے بارے میں بھی سوال اٹھائے گئے ہیں - بہرحال13جنوری کو اتراکھنڈ پولیس نے ہری دوار دھرم سنسد میں زہر اگلنے والے وسیم رضوی عرف جتیندر نارائن تیاگی کو گرفتار کر لیا ہے، جبکہ ایک اور ملزم غازی آباد کے ڈاسنہ مندر کے پجاری اور جونا اکھاڑہ کے مہامنڈلیشوریتی نرسنگھانند کی بھی گرفتاری ہفتہ کو ہوگئی ہے-


Recent Post

Popular Links