کیا حکومت کو وقت سے پہلے گرا دے گی پاکستانی آرمی؟

RushdaInfotech January 13th 2022 urdu-news-paper
کیا حکومت کو وقت سے پہلے گرا دے گی پاکستانی آرمی؟

لاہور-12جنوری(ایجنسی)پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ان کی حکومت اور فوج کے درمیان تعلقات میں کوئی پریشانی نہیں ہے- انہوں نے کہا کہ حکومت اور فوج کے بیچ دراڑ ہونے کا اپوزیشن کا الزام ختم ہو چکا ہے- میڈیا میں منگل کو شائع ہوئی ایک خبر میں یہ جانکاری دی گئی ہے- مقامی ڈان اخبار کے مطابق عمران خان نے پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان کی ایک میٹنگ میں پیر کو کہا کہ آج کل فوج اورحکومت کے بیچ تعلقات غیر معمولی ہیں اور ان کے درمیان کھٹاس ہونے کا الزام ختم ہوچکا ہے- اخبار کے مطابق خان نے ایک صحافی کے ساتھ میٹنگ میں بھی ایسے ہی خیال ظاہر کئے تھے- عمران خان سے جب فوج اور اپوزیشن پارٹی تحریک انصاف مسلم لیگ نواز پی ایم ایل اے این کے بیچ ان کی(عمران خان)حکومت کو ہٹانے کیلئے ممکنہ سمجھوتے کی خبروں اور کسی طرح کے خطرے کو لے کر سوال پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ وہ نجی طور پر کسی طرح کے دباؤ میں نہیں ہیں - انہیں حکومت کے اتحادیوں کا تعاون مل رہا ہے- انہوں نے امید ظاہر کی کہ حکومت اپنی موجودہ پانچ سالہ مدت پوری کرے گی- تقسیم کے بعد پاکستان میں صرف فوج چلتی ہے- حکومتیں فوج کی رضامندی سے آتی ہیں - اس کے علاوہ پاکستان کی فوج سلامتی اور خارجہ پالیسی سے متعلق فیصلے بھی کرتی ہے- دراصل گزشتہ دنوں یہ خبر آئی تھی کہ آئی ایس آئی (پاکستانی خفیہ ایجنسی)کے نئے سربراہ کی تقرری کو لے کر شروع ہونے والے تنازع کی وجہ سے فوج اور حکومت پاکستان کے درمیان رسہ کشی ہو گئی ہے اور فوج عمران خان کی حکومت کو ہٹانا چاہتی ہے-


Recent Post

Popular Links