اب پرالی جلانا جرم نہیں مودی حکومت نے کسانوں کے ایک اور مطالبہ کے سامنے گھٹنے ٹیکے

RushdaInfotech November 28th 2021 urdu-news-paper
اب پرالی جلانا جرم نہیں  مودی حکومت نے کسانوں کے ایک اور مطالبہ کے سامنے گھٹنے ٹیکے

نئی دہلی-27نومبر(ایجنسی) مرکز کی مودی حکومت نے کسانوں کے ایک اور مطالبہ کے آگے گھٹنے ٹیک دیئے ہیں - مرکزی وزیر زراعت نریندر سنگھ تومر نے تینوں زرعی قوانین کی واپسی کا بل پارلیمنٹ میں پیش کرنے سے قبل آج کہا کہ حکومت نے کسانوں کے ذریعے پرالی جلانے کے عمل کو جرم کے زمرے سے باہر کر دیا ہے- انہوں نے کہا کہ کسانوں کا یہ مطالبہ بھی قبول کر لیا گیا ہے-مرکزی وزیر زراعت نریندر سنگھ تومر نے کہا کہ کسانوں کے تقریباً تمام مطالبات قبول کر لئے گئے ہیں - ایسے حالات میں انہیں اب اپنے اپنے گھروں کو لوٹ جانا چاہئے- تومر نے کہا کہ جب تینوں زرعی قوانین کی واپسی کا اعلان وزیر اعظم نریندر مودی بذات خود کر چکے ہیں اور پارلیمنٹ میں بل لانے کا عمل بھی شروع ہو چکا ہے تو پھر کسانوں کی تحریک کا اب کوئی جواز باقی نہیں رہتا- اب کسانوں کو بھی اپنی فراخ دلی کا مظاہرہ کرنا چاہئے اور احتجاج ختم کر دینا چاہئے-کسان تحریک کے دوران مظاہرین کے خلاف درج مقدمات کو واپس لینے کے تعلق سے نریندر تومر نے کہا کہ یہ ریاست کا موضوع ہے، لہٰذا متعلقہ ریاستی حکومتیں ان معاملات پر فیصلہ کریں گی- انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم مودی نے کسانوں کو کم از کم امدادی قیمت(ایم ایس پی)دینے کیلئے کمیٹی بنانے کا اعلان کیا ہے، ان کی رپورٹ آتے ہی اس پر کارروائی شروع کر دی جائے گی-خیال رہے کہ29نومبر یعنی پیر کے روز سے شروع ہونے والے پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کے پہلے ہی دن حکومت زرعی قوانین کی واپسی پر بل پیش کرنے جا رہی ہے- وزیر زراعت نریندر سنگھ تومر بل پیش کریں گے اور اسی روز ایوان میں زرعی قوانین کی واپسی کے معاملے پر بحث ہوگی اور اسے منظور کرایا جائے گا- بی جے پی اور کانگریس دونوں نے اپنے تمام ممبران پارلیمان کووہپ جاری کردیا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ وہ اس دن ایوان میں موجود رہیں -


Recent Post

Popular Links