تریپورہ بی جے پی کے ایم ایل اے کی بغاوت

RushdaInfotech October 6th 2021 urdu-news-paper
تریپورہ بی جے پی کے ایم ایل اے کی بغاوت

اگرتلہ۔5 /اکتوبر (یو این آئی) تریپورہ میں بی جے پی حکومت کو اپنے ہی ایم ایل اے اور راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) کے کارکن آشیش داس کی طرف سے وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر اعلیٰ بپلب کمار دیو پر دیئے گئے بیان پر شرمندگی کا سامنا ہے۔بی جے پی ایم ایل اے نے کالی گھاٹ میں پوجا کے بعد کھل کر بی جے پی کی مخالفت کی۔ انہوں نے اس پوجا کو بی جے پی میں ایک دہائی کے ”گناہ کی صفائی“قرار دیا۔مسٹر داس ترنمول بھون کولکتہ سے آنے کے بعد سے بی جے پی قیادت پر جارحانہ انداز پر حملہ کررہے ہیں۔ انہوں نے وزیراعلیٰ اور ترنمول صدر ممتا بنرجی کو مغربی بنگال میں بھوانی پور اسمبلی نشست جیتنے پر مبارکباد دی تھی۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ 2024 ء میں ملک کی عوام محترمہ بنرجی کو وزیر اعظم بنائے گی۔ مسٹر داس نے کہا کہ تریپورہ میں بی جے پی نے اپنے ساڑھے تین سالہ دور حکومت میں عوام کو دھوکہ دیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ پنڈت دین دیال اپادھیائے اور شیاما پرساد مکھرجی کے نقش قدم پر چلنے کے بجائے وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کرپٹ اور مجرم لوگوں کی حمایت کرتے ہیں۔مسٹر داس نے بتایا کہ مسٹر دیو اپنے ساڑھے تین سال کے دور حکومت میں پارٹی کے 36 ایم ایل اے سمیت 100 کے قریب بی جے پی لیڈروں کو سنبھالنے میں ناکام رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ پہلے دن سے بدعنوانی میں ملوث ہیں۔ وزیر اعلیٰ پر الزام لگاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ان کے غیر ذمہ دارانہ بیان کی وجہ سے ہندوستان کے قریبی دوست نیپال اور سری لنکا کے ساتھ تعلقات خراب ہوئے ہیں۔مسٹر داس نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ "بی جے پی کے کئی سینئر لیڈروں سمیت ایم ایل اے، وزرا، صحافی اور بیوروکریٹس بپلب دیو کی سیاست سے پریشان ہیں۔

 


Recent Post

Popular Links