فغانستان میں خواتین کیلئے زمین تنگ جبکہ تیونس میں ّ عرب دنیا کی پہلی خاتون وزیر اعظم نامزد

RushdaInfotech October 1st 2021 urdu-news-paper
فغانستان میں خواتین کیلئے زمین تنگ جبکہ  تیونس میں ّ عرب دنیا کی پہلی خاتون وزیر اعظم نامزد

تونس:30ستمبر(ایجنسی) ایک طرف جہاں طالبان کے دور اقتدار میں افغان خواتین کی صورت حال قابل رحم ہے اور ان کیلئے زمین لگاتار تنگ ہو رہی ہے وہیں دوسری جانب عرب دنیا میں خواتین لگاتار مضبوط ہو رہی ہیں۔ عرب میڈیا کے مطابق تیونس کی تاریخ میں نجلا بودن رمضان کو ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ایک خاتون وزیر اعظم نامزد کیا گیا ہے۔خیال رہے کہ جب سے افغانستان میں طالبان حکومت قائم ہوئی ہے وہاں خوف و ہراس کا ماحول ہے اور خواتین کے تمام حقوق سلب کر لیے گئے ہیں۔ ایک طرف جہاں بچیوں کو تعلیم حاصل کرنے میں دشواری ہو رہی ہے اور یونیورسٹیوں کے کمروں میں مرد و خواتین کے درمیان پردے ڈال دیئے گئے ہیں وہیں دوسری طرف ان کی ملازمت کرنے پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ اتنا ہی نہیں خواتین کے گھر سے نکلنے کے حوالہ سے بھی کئی سخت اصول نافذ کر دیئے گئے ہیں۔تیونس کے صدر قیس سعید نے ملک میں مارشل لاء نافذ کیے جانے کے بعد 2ماہ بعد بودن کو وزیر اعظم نامزد کیا ہے۔ عرب میڈیا کے مطابق بودن ایک انجینئر ہیں اور وہ ورلڈ بینک میں بھی خدمات انجام دے چکی ہیں۔ قبل ازیں، تیونس میں صدر نے وزیر اعظم کو معزول کر کے مارشل لا نافذ کر دیا تھا۔تیونس کے صدر کے دفتر نے چہارشنبہ کے روز ایک ویڈیو جاری کیا جس میں صدر نے بودن سے اپنے دفتر میں ملاقات کی اور ان کو جلد کابینہ تشکیل دینے کا حکم دیا۔ تیونس کے صدر نے کہا کہ نئی حکومت کا بنیادی مشن کئی ریاستی اداروں میں پھیلنے والی بدعنوانی اور انتشار کو ختم کرنا ہے۔انہوں نے خاتون وزیراعظم کی نامزدگی کو تاریخی قرار دیا اور اسے تیونس اور ملک کی خواتین کیلئے ایک اعزاز قرار دیا۔ واضح رہے کہ تیونس کے صدر قیس سعید نے 2ماہ قبل وزیر اعظم ہشام مشیشی کو برطرف کرتے ہوئے ملک میں مارشل لا نافذ کر دیا تھا۔ تیونس میں ایک خاتون کا وزیر اعظم مقرر کیا جانا عرب دنیا میں خواتین کو بااختیار بنائے جانے کے اسی سلسلہ کی ایک کڑی ہے۔


Recent Post

Popular Links