نئے انڈیا میں سچ بولنے کا مطلب سزا کو دعوت دینا ہے:محبوبہ مفتی

RushdaInfotech August 19th 2021 urdu-news-paper
نئے انڈیا میں سچ بولنے کا مطلب سزا کو دعوت دینا ہے:محبوبہ مفتی

سری نگر-18/ اگست (یو این آئی) پی ڈی پی صدر و سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے الزام لگایا کہ بی جے پی کے نئے انڈیا میں سچ بولنے کا مطلب سزا کو دعوت دینا ہے -انہوں نے کہا کہ آج جو بھی بی جے پی کی تقسیم کرنے والی سیاست اور اس کے جموں و کشمیر سے متعلق غلط بیانیہ کے خلاف بولتا ہے اس کو اس کی سزا بھگتنی پڑتی ہے -محبوبہ مفتی نے یہ باتیں بدھ کو یہاں انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کے دفتر کے باہر نامہ نگاروں سے گفتگو میں کہیں جہاں وہ اپنی والدہ کے ساتھ آئی تھیں جنہیں پوچھ گچھ کیلئے بلایا گیا تھا-انہوں نے کہاکہ آپ نے کل خود دیکھا کہ کس طرح پیشہ ورانہ فرائض کی انجام دہی کے دوران آپ لوگوں کو پیٹا گیا- نئے انڈیا میں جو بھی سچ بولتا ہے اس کو اس کی سزا دی جاتی ہے - این آئی اے اور ای ڈی جیسی ایجنسیاں، جن کو بہت ہی سنجیدہ کاموں کیلئے بنایا گیا تھا، کا استعمال سیاستدانوں، کارکنوں، میڈیا اہلکاروں اور طلبہ کے خلاف کیا جا رہا ہے-انہوں نے کہاکہ آج جو بھی سچ بولتا ہے، جو بھی بی جے پی کی تقسیم کرنے والی سیاست کے خلاف بات کرتا ہے یا جو بھی ان کے جموں و کشمیر سے متعلق غلط بیانیہ کے خلاف بولتا ہے اس کو یہ سزا بھگتنی پڑتی ہے -جب نامہ نگاروں نے محبوبہ مفتی سے پوچھا کہ ان کی والدہ کو ای ڈی نے کیوں طلب کیا تھا تو ان کا کہنا تھاکہ آپ کرونولاجی سمجھتے ہیں - میں نے حد بندی کمیشن سے ملنے سے انکار کیا تو دوسرے دن سمن بھیجا گیا- میں نے پانچ اگست کو ایک پرامن احتجاجی ریلی نکالی تو دوسرے دن سمن پہنچا-ان کا مزید کہنا تھاکہ بدقسمتی سے ہمارے ملک کے اداروں جن کی ذمہ داری ہمارے آئینی حقوق کی حفاظت کرنا تھا کو ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جا رہا ہے - اسی طرح میڈیا اداروں کی اکثریت بی جے پی کے بیانیہ پر عمل پیرا ہے -


Recent Post

Popular Links