صدی کی سب سے بڑی آفت کے باوجود کوئی شہری بھوکا نہیں رہا:مودی

RushdaInfotech August 4th 2021 urdu-news-paper
صدی کی سب سے بڑی آفت کے باوجود کوئی شہری بھوکا نہیں رہا:مودی

نئی دہلی-3اگست(آئی این ایس)وزیر اعظم نریندر مودی نے آج گجرات میں پردھان منتری غریب کلیان انا یوجنا کے مستفیدین کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے بات چیت کی- اسکیم کے تعلق سے مزید بیداری پیدا کرنے کے لیے ریاست گیر پیمانے پر عوامی شراکت پر مبنی پروگراموں کا آغازبھی کیا گیا-تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ گجرات میں لاکھوں خاندانوں کو پی ایم غریب کلیان انا یوجنا کے تحت مفت راشن مل رہا ہے- یہ مفت راشن غریبوں کی تکلیف کو کم کرتا ہے اور انہیں پرْاعتماد بناتا ہے- انہوں نے کہا کہ غریبوں کو احساس کرانا چاہیے کہ جس قسم کی بھی مصیبت کا سامنا کرنا پڑے، ملک ان کے ساتھ ہے-وزیر اعظم نے زور دیتے ہوئے کہ آزادی کے بعد تقریباًہر حکومت غریبوں کو سستا کھانا فراہم کرانے کی بات کرتی تھی- سستی راشن سکیموں کا دائرہ کار اور بجٹ سال بہ سال بڑھتا گیا، لیکن اس کا اثر اب بھی کافی حد تک محدود ہی ہے- ملک کے غذائی ذخائر بڑھتے رہے، لیکن بھوک اور غذائی قلت اس تناسب سے کم نہیں ہوئی- اس کی ایک بڑی وجہ موثر ترسیلی نظام کی کمی تھی- اس صورت حال کو تبدیل کرنے کے لئے 2014 کے بعد نئے سرے سے کام شروع کیا گیا- انہوں نے کہا کہ نئی ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے کروڑوں جعلی مستفیدین کو سسٹم سے نکال دیا گیا اور راشن کارڈ کو آدھار کارڈ سے جوڑ دیا گیا- اس سے اس بات کو یقینی بنانے میں مدد ملی کہ صدی کی سب سے بڑی آفت کے باوجود کوئی شہری بھوکا نہ رہے جب لاک ڈاؤن کی وجہ سے روزی روٹی خطرے میں پڑ گئی اور کاروبار متاثر ہوا- دنیا نے پردھان منتری غریب کلیان انا یوجنا کو تسلیم کیا ہے- وزیر اعظم نے کہا کہ وبائی امراض کے دوران80کروڑ سے زائد لوگوں کومفت راشن دستیاب کرایا گیا ہے جس پر2 لاکھ کروڑ روپے سے زیادہ کاخرچ آنے کا امکان ہے-وزیر اعظم نے آج کہاہے کہ2 روپے فی کلو گندم کے کوٹے کے علاوہ3 روپے فی کلو چاول،5کلو گندم اور چاول ہر مستحق کو مفت دیا جا رہا ہے- یعنی یہ اسکیم شروع ہونے سے پہلے کے مقابلے میں راشن کارڈ ہولڈرز کو تقریباًدگنی رقم فراہم کی جا رہی ہے- یہ اسکیم دیوالی تک جاری رہے گی- کوئی غریب بھوکا نہیں سوئے گا، وزیراعظم نے کہا- انہوں نے گجرات حکومت کی طرف سے تارکین وطن مزدوروں کی دیکھ بھال کرنے، ون نیشن ون راشن کارڈ تحریک کے مقصد کو پورا کرنے کی ستائش کی-وزیر اعظم نے کہاہے کہ آج ملک انفراسٹرکچر پر لاکھوں کروڑ خرچ کر رہا ہے، لیکن اس کے ساتھ ساتھ، عام انسانوں کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کے لیے، یہ آسان زندگی کے لیے نئے معیارات بھی قائم کر رہا ہے- آج غریبوں کو بااختیار بنانے کو اولین ترجیح دی جا رہی ہے- انہیں بااختیار بنایا جا رہا ہے کیونکہ2کروڑ سے زائد غریب خاندانوں کو گھر ملے،10 کروڑ خاندانوں کو بیت الخلا ملے- وزیر اعظم نے کہا کہ اسی طرح جب وہ جن دھن اکاؤنٹ کے ذریعے بینکنگ سسٹم میں شامل ہوتے ہیں تو وہ بااختیار ہو جاتے ہیں -وزیراعظم نے کہا کہ بااختیاربنانے کو یقینی بنانے کیلئے صحت، تعلیم، سہولیات اوروقارکا خاص خیال رکھتے ہوئے سخت اورمسلسل محنت کی ضرورت ہے- آیوشمان یوجنا، معاشی طور پر کمزور طبقات کے لیے ریزرویشن، سڑکیں، مفت گیس اور بجلی کا کنکشن، مدرا یوجنا، سوانیدھی یوجنا جیسی اسکیمیں غریبوں کے لیے باوقار زندگی کونئی سمت دے رہی ہیں اور بااختیار بنانے کا ذریعہ بن رہی ہیں -


Recent Post

Popular Links