اراضی گھپلوں کی تحقیقات سی بی آئی کے حوالے کی جائیں:رعیت سنگھا

RushdaInfotech July 26th 2021 urdu-news-paper
اراضی گھپلوں کی تحقیقات سی بی آئی کے حوالے کی جائیں:رعیت سنگھا

ملباگل۔25جولائی(عمران خان۔نامہ نگار)قصبہ روینیو کی حدود میں آنے والے اراضی گھپلوں کی تحقیقات سی بی آئی کے حوالے کی جائیں اور وائی کوگیلیری کے سروے نمبر 63کی 480/ایکڑ زمین جو غیرقانونی طور پر منظور کی گئی ہے اس منظوری کو رد کئے جانے کا مطالبہ کرتے ہوئے 30جولائی کو کسان اپنے مویشیوں سمیت تعلقہ آفس کا گھیراؤکریں گے۔یہ فیصلہ رعیت سنگھاکے اجلاس میں کیاگیا۔شہر کے ٹراولرس بنگلہ میں منعقدہ اجلا س کی صدارت کرتے ہوئے رعیت سنگھا کے ریاستی نائب صدر کے نارائن گوڈا نے کہاکہ حکومت کا کام بھگوان کا کام ہے، مگر ملباگل کے محکمہ مال گذاری اور سروے ڈپارٹمنٹ کے افسروں نے اپنے اختیارات کا غلط استعمال کرتے ہوئے تالابوں،برساتی نالوں،سرکاری زمین کی جعلی دستاویز تیارکرکے لینڈ مافیاکو زمین حوالے کر دی ہے۔ترقیاتی کاموں او ر مویشیوں کیلئے مختص کردہ زمین چراغ لے کر ڈھونڈنے سے بھی نہیں مل رہی ہے۔ سرکاری زمین پرائیویٹ والوں کے حوالے کر کے سرکاری آفیسرس حکومت کو دھوکہ دے رہے ہیں،ان تمام کی بدعنوانیوں کی تحقیقات کرائی جانی چاہئیں۔ تعلقہ رعیت سنگھا کے صدر فاروق پاشاہ نے کہاکہ سروے ڈپاٹمنٹ اور محکمہ مالگذاری کے ریکارڈ روم ریئل ایسٹیٹ کے کاروباریوں کے دفاتر میں تبدیل ہو چکے ہیں۔ ان دفاتر سے اہم دستاویز ہی غائب ہوتی جارہی ہیں اور راتوں رات زمین ریئل ایسٹیٹ کے صنعت کاروں کے نام ہورہی ہے۔ا س اجلاس میں ضلعی صدر منجوناتھ،ہسیرو سیناکے تعلقہ صدر پربھاکر،آنند ریڈی،نوین،وینو،وینکٹ ریڈی،کشور کے علاوہ دیگر موجود تھے۔


Recent Post

Popular Links