کرناٹک کی کمارسوامی حکومت گرانے میں پیگاسس جاسوسی کا دخل ڈاکٹر جی پرمیشور سمیت کمارسوامی اور سدارامیا کے سکریٹریوں کے موبائیل نمبروں کے ذریعہ جاسوسی کا انکشاف

RushdaInfotech July 21st 2021 urdu-news-paper
کرناٹک کی کمارسوامی حکومت گرانے میں پیگاسس جاسوسی کا دخل ڈاکٹر جی پرمیشور سمیت کمارسوامی اور سدارامیا کے سکریٹریوں کے موبائیل نمبروں کے ذریعہ جاسوسی کا انکشاف

بنگلورو۔20جولائی(سالار نیوز)2019کے دوران کرناٹک کی کانگریس جنتا دل (ایس) مخلوط حکومت کو گرانے کے لئے کیا بی جے پی کی مرکزی قیادت نے جاسوسی سافٹ ویر پیگا سس کا سہار ا لیا جس کے ذریعے دنیا بھر کی بڑی ِشخصیتوں کی جاسوسی کئے جانے کا ہنگامہ ان دنوں چل رہا ہے۔ معروف اخباری ویب سائٹ دی وائر کی تازہ رپورٹ میں اس کی تصدیق کی گئی ہے اور بتایا گیا ہے کہ 2019کے دوران آپریشن کنول کو انجام تک پہنچانے اور کانگریس و جنتادل (سکیولر) کے 17/ اراکین اسمبلی کی پارٹی تبدیل کروانے سے پہلے کرناٹک کے تین بڑے سیاسی قائدین کی جاسوسی کی گئی۔ جن قائدین کی جاسوسی کی گئی ان میں سابق نائب وزیر اعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور، سابق وزیر اعلیٰ اور موجودہ اپوزیشن لیڈر سدارامیا اور سابق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی کے سکریٹریوں کے موبائیل نمبر سامنے آئے ہیں۔ فرانس کے غیر منافع بخش میڈیا ادارے فاربڈن اسٹوریز کی طرف سے جو ڈاٹا بیس سامنے آیا ہے ان میں کرناٹک کے ایک سیاستدان پرمیشور کا نمبر اور دوسیاستدانوں سدرامیا اور کمارسوامی کے سکریٹریوں کے موبائیل نمبر س سامنے آئے ہیں۔جاسوسی ایسے وقت میں کی گئی جب کانگریس کے رہنما راہل گاندھی نے اپنا پرانا موبائیل نمبر بدل کر نیا نمبر لیا تھا۔ حالانکہ ڈجیٹل فورنسک تصدیق نہیں ہو سکی ہے لیکن اتنا تو طے ہے کہ جاسوسی اس وقت ہوئی ہوگی جب کرناٹک میں اقتدار کیلئے رسہ کشی زوروں پر تھی۔کانگریس اور جے ڈی ایس نے پہلے ہی جاسوسی کئے جانے کے الزامات لگائے تھے اب پیگاسس کے سہارے سے کرنا ٹک کے سیاستدانوں کے موبائیل نمبروں کی نگرانی کے بین الاقومی سطح سے انکشاف نے ان شبہات کو تقویت دی ہے۔یہ سامنے آیا ہے کہ اس وقت کے وزیر اعلیٰ کمارسوامی کے سکریٹری ستیش کے نمبر کی جاسوسی کی گئی۔ اسی طرح سدارامیا کے سکریٹری وینکٹیش کے نمبر پر بھی جاسوسی کی گئی۔ وینکٹیش نے کہا ہے کہ جس وقت جاسوسی کے بارے میں خبریں سامنے آئی ہیں اس وقت وہ وہی موبائیل نمبر استعمال کر رہے تھے جو انکشاف میں شامل ہے۔اسی طرح سابق وزیر اعظم دیوے گوڈا کی سکیورٹی میں شامل منجوناتھ مدے گوڈا کے نمبر کی بھی پیگاسس کے ذریعے جاسوسی کا انکشاف ہوا ہے۔ فاربڈن اسٹوریز کے ڈاٹا کے ذریعہ پرمیشور کا جو موبائل نمبر سامنے آیا ہے اس کے بارے میں سوال کئے جانے پر ڈاکٹر پرمیشور نے تصدیق کی کہ 2019کے دوران وہ مذکورہ موبائل نمبر استعمال کر رہے تھے لیکن گزشتہ چنہ مہینوں سے انہوں نے اس نمبر کو استعمال کرنا بند کر دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ان کو ممکنہ جاسوسی سافٹ کے استعمال کا کوئی علم نہیں اور اس دور میں وہ کسی سیاسی مینجمنٹ کا حصہ نہیں تھے اور نہ ہی وہ پردیش کانگریس کے صدر کے عہدے پر تھے۔


Recent Post

Popular Links