مودی کے وزیر کی قومیت پر سوال وزیر مملکت برائے داخلہ نشیتھ پرمانک بنگلہ دیشی شہری!ترنمول کا دعویٰ

RushdaInfotech July 19th 2021 urdu-news-paper
مودی کے وزیر کی قومیت پر سوال  وزیر مملکت برائے داخلہ نشیتھ پرمانک بنگلہ دیشی شہری!ترنمول کا دعویٰ

کولکاتہ-18جولائی(ایجنسی)پارلیمان کے مانسون اجلاس سے سیاسی میدان میں ایک خوفناک دھماکے کی آواز سنی جارہی ہے-وزیراعظم نریندرمودی کے وزیر مملکت برائے داخلہ اور مغربی بنگال سے ممبر پارلیمان ن نشیتھ پرمانک کی شہریت یعنی قومیت پر سوال کھڑاہوگیاہے -اس سنسنی خیز خبرسے سیاسی گلیاروں میں زبردست ہلچل مچی ہوئی ہے- دراصل راجیہ سبھاممبر اور آسام پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر رپن بورا نے ہفتہ کو وزیر اعظم نریندر مودی سے مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ نشیتھ پرمانک کے مبینہ طور پر بنگلہ دیشی ہونے کے الزام کی جانچ کرانے کی مانگ کی-حالانکہ پرمانک کے قریبی اور مغربی بنگال سے بی جے پی کے لوک سبھا ممبر پارلیمان نے الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہاکہ وزیر کی پیدائش، پرورش اورتعلیم بھارت میں ہی ہوئی ہے- اس درمیان ترنمول کانگریس لیڈروں نے اس معاملے پر تبصرہ کرتے ہوئے پوچھا ہے کہ مرکزی سرکار نے ایسی ’سکیورٹی خامی‘ کیسے ہونے دی-آؤٹ لک کی رپورٹ کے مطابق مغربی بنگال بی جے پی کے جنرل سکریٹری سینتن باسو نے ٹی ایم سی کو اس معاملے کو عدالت میں لے جانے کا مشورہ دیا ہے- وزیر اعظم مودی کو لکھے گئے خط اور ٹوئٹر پر شیئر کئے لیٹر میں بورا نے دعویٰ کیاہے کہ براک بنگلہ، ری پبلک ٹی وی تریپورہ، ڈجٹیل میڈیا، انڈیا ٹو ڈے اور بزنس اسٹینڈرڈ نے اپنی خبر میں بتایاہے کہ پرمانک بنگلہ دیشی شہری ہیں -خبروں کا حوالہ دیتے ہوئے ممبرپارلیمان نے دعویٰ کیا کہ وزیر کی جائے پیدائش ہری ناتھ پور ہے جو بنگلہ دیش کے گوباندھا ضلع کے پلاس باڑی پولیس تھانہ کے ماتحت آتاہے اور خبر ہے کہ وہ کمپیوٹر کی تعلیم حاصل کرنے کیلئے مغربی بنگال آئے تھے- بورا نے دعویٰ کیا کہ کمپیوٹر میں ڈگری حاصل کرنے کے بعد پہلے وہ ترنمول کانگریس میں شامل ہوئے اور بعد میں بی جے پی میں شامل ہوئے اور کوچ بہار سے رکن اسمبلی منتخب ہوئے-بورا نے دعویٰ کیا ہے کہ نیوز چینلز کے مطابق پرمانک نے ’چھیڑ چھاڑ‘ کرکے انتخابی کاغذات نامزدگی میں اپنا پتہ کوچ بہار ظاہر کیا ہے- چینلوں نے بنگلہ دیش واقع ان کے آبائی گاؤں کے ’خوشنما ماحول‘ کا بھی ذکر کیاہے- اور ان کے ’بڑے بھائی‘اور کچھ گاؤں والے پرمانک کے مرکزی وزیر مملکت بننے پر اطمینان کااظہار کررہے ہیں -بورا نے وزیر اعظم مودی کو لکھے خط میں کہاکہ اگر ایسا ہے تو ملک کیلئے بہت سنگین معاملہ ہے کہ ایک غیرملکی کو مرکزی وزیر کے طور پر مقررکیا گیا ہے- اس لئے میں آپ (وزیر اعظم) سے مانگ کرتا ہو ں کہ نشیتھ پرمانک کی جائے پیدائش اور قومیت کی جانچ شفاف انداز میں کی جائے تاکہ پورے ملک میں پیدا ہونے والی الجھن کو دور کیا جاسکے-مغربی بنگال کے وزیر مملکت برائے اطلاعات و ثقافتی امور، اندرانل سین نے ایک ٹوئٹر پوسٹ میں کہا کہ یہ جان کر حیران اور پریشان ہوں کہ مرکزی وزیر نشیتھ پرمانک بنگلہ دیش کے شہری ہو سکتے ہیں! اگر موجودہ مرکزی وزیر ایک غیر ملکی شہری ہیں تو یہ بھارت کی سلامتی کیلئے تشویشناک بات ہے- نریندر مودی حکومت اس طرح کی سکیورٹی چوک کیسے ہونے دے سکتی ہے-؟


Recent Post

Popular Links