بیلگاوی میں فوری اسمبلی سیشن طلب کرنے سدارامیا کا مطالبہ مختلف عوامی مسائل کو نظر انداز کرنے اور انتظامیہ میں ناکامی کا حکومت پر الزام

RushdaInfotech July 15th 2021 urdu-news-paper
بیلگاوی میں فوری اسمبلی سیشن طلب کرنے سدارامیا کا مطالبہ مختلف عوامی مسائل کو نظر انداز کرنے اور انتظامیہ میں ناکامی کا حکومت پر الزام

بنگلورو۔14/جولائی (سالارنیوز) ریاستی عوام کے کئی اہم اور سلگتے مسائل ہیں۔ ان مسائل پر بحث و مباحثہ کرنے جلد از جلد بیلگاوی میں اسمبلی سیشن طلب کرنے اپوزیشن کانگریس لیڈر سدارامیا نے ریاستی حکومت سے مطالبہ کیا ہے۔ اس سلسلہ میں انہوں نے وزیراعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا اور اسمبلی اسپیکر ویشویشور ہیگڈے کاگیری کو خط لکھا ہے جس میں فوری بیلگاوی میں اسمبلی سیشن طلب کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے اپنے خط میں کہا ہے کہ سیشن قانون 2005 کی دفعہ 3اور4 کے مطابق اسمبلی اجلاس ماہ جولائی ہی میں طلب کیا جانا تھا لیکن حکومت ضابطوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سیشن طلب کرنے کے سلسلہ میں اب تک کارروائی شروع ہی نہیں کی ہے۔ ریاستی عوام اس وقت مختلف مسائل سے دوچار ہے۔ ریاست میں اہم مسائل ریاست کی معیشت کمزور ہوچکی ہے، انتظامیہ ہر محاذ پر ناکام ہے۔ محکمہئ صحت کی حالت کافی خراب ہے۔ ان تمام مسائل پر تفصیلی بحث ومباحثہ کرنے فوری سیشن طلب کرنے کا انہوں نے مطالبہ کیا ہے۔ کووڈ کی دوسری لہر سے نمٹنے میں حکومت بری طرح ناکام ہے۔ کووڈ کی دوسری لہر کے دوران ریاست میں تین لاکھ سے زیادہ اموات ہوئی ہیں۔ لیکن حکومت یہ اعداد وشمار چھپاکر تقریباً35/ہزار اموات بتارہی ہے۔ ریاستی حکومت کووڈ کی تیسری لہر کا سامنا کس طرح کرے گی اس کے لئے کوئی ایکشن پلان اب تک تیار نہیں۔یہ تمام معاملات اسمبلی اجلاس ہی میں زیربحث آسکتے ہیں۔ مرکزی حکومت کی طرف سے کرناٹک کو جو امداد ملنی چاہئے اس کی تفصیل ریاستی حکومت نے اب تک جاری نہیں کیا۔ سدارامیا نے الزام لگایا ہے کہ اس حکومت میں بدعنوانی عروج پر ہے۔ اس پر بھی ایوان میں تفصیلی بحث ہونی چاہئے۔ سدارامیا نے بتایاکہ پارلیمانی امور کے ضابطوں کے تحت ہرسال کم از کم 70/ دنوں کا سیشن چلانا چاہئے جو 4/سیشنوں پر مشتمل ہو۔ یہ سیشن ماہ جنوری،مارچ، جولائی اور نومبر میں منعقد کرنا چاہئے تھا لیکن بی جے پی حکومت نے ان ضابطوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اب تک سیشن طلب کرنے کی تیاری بھی نہیں کی ہے۔


Recent Post

Popular Links