بورنگ اسپتال میں بلیک فنگس علاج ومعالجہ کاانتظام آج سے تجرباتی آغاز،عنقریب اضلاع میں علاج شروع ہوگا:سدھاکر

RushdaInfotech May 17th 2021 urdu-news-paper
بورنگ اسپتال میں بلیک فنگس علاج ومعالجہ کاانتظام آج سے تجرباتی آغاز،عنقریب اضلاع میں علاج شروع ہوگا:سدھاکر

بنگلور۔16مئی (سالارنیوز) کرناٹک میں کوروناوائرس کے خوفناک پھیلاؤ کے درمیان ریاست کے عوام میں بلیک فنگس نے خوف وخدشات میں اضافہ کردیاہے۔ ریاست کے بہت سارے اضلاع میں بلیک فنگس کے کئی معاملات پیش آئے ہیں۔اس سلسلہ میں بروزاتوارریاستی وزیرصحت ڈاکٹرکے سدھاکرنے ردعمل ظاہرکرتے ہوئے کہاکہ بلیک فنگس کاعلاج ومعالجہ کے لیے بنگلورکے بورنگ اسپتال میں تجرباتی طورپرانتظام کیاجارہاہے۔یہاں کامیابی کے بعد ریاست کے دیگراضلاع میں بھی بلیک فنگس کے علاج کے لیے انتظامات کئے جائیں گے۔انہوں نے وجوہات بتاتے ہوئے کہاکہ جن لوگوں میں قوت مدافعت کم ہوتی ہے،جواسٹیورائڈکثیرمقدار میں استعما ل کرتے ہیں اورذیابیطس مرض کاشکارمریض جب کوروناوائرس کی زدمیں آتے ہیں توان پربلیک فنگس اثراندازہوتاہے۔ناک سے شروع ہونے والایہ مرض آنکھوں کونقصان پہنچاتاہے۔بلیک فنگس کا شکارہونے والے مریض اپنی آنکھوں کی بینائی سے محروم ہوسکتے ہیں۔اگرا س مرض کابروقت علاج نہیں کیاجاتاہے تو موت بھی ہوسکتی ہے۔ سدھاکرنے کہاکہ بلیک فنگس جب مہاراشٹرمیں دکھائی دیا تو اسی وقت وہاں کے امراض چشم کے ماہرین سے تبادلہ خیال کیاگیاتھا۔کل پیرکے دن سے بورنگ اسپتال میں بلیک فنگس کاعلاج عمدہ طریقہ سے کرنے کا تجربہ شروع کردیاجائے گا۔بعدازاں ریاست کے تمام اضلاع کے ضلعی اسپتالوں اورمیڈیکل کالجوں میں شروع کیاجائے گا۔امراض چشم کے ماہرین سمیت تین چارماہرڈاکٹروں کی زیرقیادت ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔بلیک فنگس کے لیے کس قسم کا علاج فراہم کرناہے یہ کمیٹی صلاح مشورہ دے گی۔انہوں نے کہاکہ بلیک فنگس کے لیے مسلسل 7ہفتوں تک علاج فراہم کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔اس کے لیے 2تا3لاکھ روپے خرچ آسکتاہے۔اس خرچ کوحکومت کی جانب برداشت کرنے کے لیے وزیراعلیٰ بی ایس ایڈی یورپاسے تبادلہ خیال کیاجائے گا۔انہوں نے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ جوبھی مریض بلیک فنگس کاشکارہوتے ہیں تووہ فوری طورپر ڈاکٹروں سے رجوع کرتے ہوئے اپنی آنکھوں کی تشخیص کروالیں۔اس کے لیے درکارایمپوٹریسن دوائی مرکزی حکومت سے فراہم کی جائے گی۔ریاستی حکومت کی جانب سے 20ہزارڈوزفراہمی کی تجویزپیش کی گئی ہے۔انہوں نے انتباہ دیتے ہوئے کہاکہ بلیک فنگس کا شکارکوئی بھی مریض ڈاکٹروں کی صلاح کے بغیراسٹورائڈودیگردوائیاں خودسے لینے سے گریزکریں۔ڈاکٹروں کوبھی چاہئے کہ وہ بلاضرورت مریضوں کوقوت مدافعت بڑھانے والی دوائیاں تجویزنہ کریں۔


Recent Post

Popular Links