مدھول اور پانڈوا پورہ میں آکسیجن پیداوار یونٹس کا قیام نرانی گروپ آف کمپنیز کی سماجی ذمہ داری

RushdaInfotech May 12th 2021 urdu-news-paper
مدھول اور پانڈوا پورہ میں آکسیجن پیداوار یونٹس کا قیام نرانی گروپ آف کمپنیز کی سماجی ذمہ داری

بنگلورو۔11مئی (سالارنیوز) جنوبی ہند میں سب سے زیادہ شکر کی پیداوار اور ایشیاء میں سب سے زیادہ راتھینال کی پیداوار کے لئے مشہور باگل کوٹ ضلع کے مدھول میں نرانی صنعتی ادارہ نے روزانہ 1700سلنڈر آکسیجن تیار کرنے والے یونٹ قائم کرنے کا عزم ظاہر کیا تھا جس کا کام زوروں سے جاری ہے۔ اطلاع کے مطابق 15/اگست سے یہ یونٹ کام شروع کرے گا جس سے باگل کوٹ اور منڈیا ضلع کے کووِڈ اسپتالوں کو مفت آکسیجن فراہم کی جاسکے گی۔ بتایا جاتا ہے کہ نرانی گروپ آف کمپنیز نے کووِڈ متاثرین کو آکسیجن فراہم کرنے کے لئے مدھول کے نرانی شوگرس اور منڈیا ضلع پانڈواپورہ کے ایم آر این بائیو ریفائنریز(پی ایس ایس کے)کارخانہ میں میڈیکل آکسیجن یونٹ شروع کیا جارہا ہے۔ آتمانربھر بھارت اسکیم کے تحت بائیو سی این جی کی تیاری میں نرانی گروپ آگے بڑھا ہے جس کے تحت گزشتہ مرتبہ کووِڈ کی پہلی لہر کے موقع پر آلکوہال کے ساتھ ہینڈ سینی ٹائزر تیار کرکے عوام کو مناسب دام میں فروخت کیا۔ نرانی گروپ کے بانی وریاستی وزیر برائے مائنز اینڈ جیولوجی مروگیش نرانی نے بتایا کہ سماج کے مشکلات کو دور کرنے ہر ایک صنعت کار کو آگے آنا چاہئے،اسی لئے کووِڈ متاثرین کو مفت آکسیجن فراہم کرنے کے مقصد کے تحت نرانی گروپ نے دو یونٹ قائم کرنے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں یونٹ 15/اگست سے شروع ہوں گے جس سے بیلگاوی اور میسور علاقہ کے کووِڈ اسپتالوں کو مفت آکسیجن فراہم کیا جائے گا۔بتایا جاتا ہے کہ نرانی کے حلقہ بیلگی میں تعلقہ سرکاری اسپتال کے لئے اپنے صرف خاص سے آکسیجن خرید کر سپلائی کیا جارہا ہے۔ مدھول کے نرانی شوگرس کے احاطہ میں 500 کیوسک میٹر صلاحیت والا آکسیجن پیدا وار یونٹ قائم ہورہا ہے۔ جس میں فی گھنٹہ 71سلنڈر یعنی ہر دن 1704سلنڈر بھرتی کرنے کی آکسیجن پیدا کی جاسکتی ہے۔ اس یونٹ سے بیلگاوی، باگل کوٹ اور وجئے پور اضلاع میں آکسیجن کی قلت دور کی جاسکتی ہے۔ نرانی گروپ کے ایک افسر نے بتایا کہ اس سلسلہ میں پینیا بنگلور کی ایک آئی ایس او سرٹیفائڈ کمپنی آکسی انڈیا پرائیویٹ لمیٹڈ کے ساتھ معاہدہ کیا گیا ہے۔


Recent Post

Popular Links