کوروناوائرس کے معاملات میں اضافہ کیلئے ضلع انتظامیہ کی ناکامی ہی اصل وجہ:سارامہیش کا الزام

RushdaInfotech May 4th 2021 urdu-news-paper
کوروناوائرس کے معاملات میں اضافہ کیلئے  ضلع انتظامیہ کی ناکامی ہی اصل وجہ:سارامہیش کا الزام

میسور:3/مئی (سالارنیوز)ضلع میں کوروناوائرس کے معاملا ت میں اضافہ کیلئے ضلع انتظامیہ کی ناکامی ہی اصل وجہ ہے۔یہ الزام سابق ریاستی وزیر وکے آر نگر کے رکن اسمبلی سارامہیش نے لگایا۔انہوں نے یہاں شہر میں واقع ان کی رہائش گاہ پر طلب کردہ اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کوروناکے مریضوں کو وقت پر ضروری علاج نہ ملنے پر موت کے منہ میں جاناپڑرہاہے،اس کیلئے ضلع انتظامیہ کی ناکامی ہی اصل سبب ہے۔کوو ڈپر قابوپانے کے معاملے میں ضلع انتظامیہ پوری طرح ناکام ہے،اس لئے اس سے قبل جس طرح حکومت نے آئی اے ایس آفیسر ہرشاگپتاکا تقرر عمل میں لایاتھاٹھیک اسی طرح اب بھی کوروناپر قابوپانے کیلئے علاحدہ آفیسر کا تقرر عمل میں لایاجائے۔سارامہیش نے کہاکہ پچھلی مرتبہ ابھی رام جی شنکر جب ڈپٹی کمشنر تھے کووڈ پر قابوپانے کیلئے ٹھوس اقدامات کئے تھے۔کوروناکے مریضوں کی جانکاری حاصل کی جاتی تھی اور مریضوں کو گھر سے باہر نکلنے نہیں دیاجاتاتھا،کووڈ سے مرنے والوں کی آخری رسومات بھی پروٹوکال کے تحت ادا کی جاتی تھیں۔اب اس طرح کا کوئی نظم نہیں ہے،کسی بھی طرح کے ٹھوس اقدامات نہ کئے جانے کے سبب ہی کووڈ کے معاملات میں غیر معمولی اضافہ ہورہاہے۔رکن اسمبلی نے شدید برہمی ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ کے آر نگر کے اسپتال میں وینٹی لیٹر سمیت دیگر تمام ضروری سہولتیں ہونے کے باوجود مریضوں کے علاج اور چیزوں کے استعمال کیلئے ڈاکٹروں اور عملہ کی قلت ہے،وقت پر علاج ممکن نہ ہونے کے سبب ایک خاتون کی موت ہوگئی۔آخری رسومات کی ذمہ داری پروٹوکال کے تحت نہ ہونے کے سبب گھروالوں کو ہی آخری رسومات میں شامل ہوناپڑا۔آخری رسومات میں شرکت کئے ہوئے 25/افراد کو وڈ کا شکار ہوئے ہیں۔یہ ضلع انتظامیہ کی لاپروائی نہیں تو کیاہے؟،کیااس معاملے میں سوال کرنا غلط ہے؟۔اسی طرح ایک سڑک حادثے میں مرنے والے کووڈ کے مریض کی آخری رسومات بھی اس کے اہل خانہ نے ہی اداکئے ہیں،اس طرح سے پروٹوکال کی خلاف ورزی کرکے آخری رسومات اداکئے جانے سے ہی کووڈ کے معاملات میں اضافہ ہواہے۔اس کیلئے صرف اورصرف حکومت ہی زمہ دارہے۔ضلع انتظامیہ اور ضلع نگران کا ر وزیرکے زندہ رہنے کے بارے میں پوچھے جانے پر نگران کار وزیر کو غصہ آگیاتھا،عوام کے حالات دیکھ کر بے قابوہوگیاتھااور اس طرح کا سوال کیاتھا۔انہوں نے مشورہ دیاکہ کوروناسے ہونے والی اموا ت کیلئے کورونارپورٹ حاصل ہونے کے بعد ہی لاش گھر والوں کے حوالے کی جائے اگر پازیٹیو رپورٹ آئے تو پروٹوکال کے مطابق ہی آخری رسومات اداکی جائیں۔سارامہیش نے کہاکہ کوروناکی دوسر ی لہر نے حالات بگاڑ دئے ہیں۔حالات بگڑنے سے قبل ہی اگراحتیاطی اقدامات کرلئے جاتے تو کتنااچھاہوتا۔اسپتالوں میں جاری عملہ کی قلت دور کرنے کیلئے دو ماہ قبل ہی تقررات کی کارروائی عمل میں لائی جانی چاہئیتھی۔اس موقع پر ضلع پنچایت کے سابق رکن سی جے دوارکیش،سابق ڈپٹی میئر وی شائلیندرا،کارپوریٹر کے وی ملیش،ج ڈی ایس لیڈر روی چندرے گوڈااور دیگر شریک تھے۔


Recent Post

Popular Links