یوپی بلدیاتی الیکشن کی کاؤنٹنگ روکی جائے،ورنہ بائیکاٹ کریں گے الیکشن کے دوران الیکشن کمیشن نے لاپرواہی برتی، اساتذہ نے محاذکھولا

RushdaInfotech May 2nd 2021 urdu-news-paper
یوپی بلدیاتی الیکشن کی کاؤنٹنگ روکی جائے،ورنہ بائیکاٹ کریں گے الیکشن کے دوران الیکشن کمیشن نے لاپرواہی برتی، اساتذہ نے محاذکھولا

لکھنؤ،یکم مئی(ایجنسی)اترپردیش میں یوپی میں کورونا وائرس کی رفتار بے قابو ہے۔ روزانہ 34 ہزار سے زیادہ کیس آرہے ہیں۔ ریاست میں جمعہ کے روز ایک ہی دن میں زیادہ سے زیادہ 332 مریضوں کی موت ہوگئی۔ ادھر 2 مئی کو یوپی پنچایت الیکشن کی گنتی کی تیاریاں زوروں پر ہیں۔ تاہم پرائمری اساتذہ فیڈریشن نے الیکشن کمیشن کے خلاف محاذکھول دیا ہے۔ اساتذہ فیڈریشن کامطالبہ ہے کہ 2 مئی کو ہونے والی ووٹوں کی گنتی کو کم سے کم دو ماہ میں بڑھایا جائے، بصورت دیگر گنتی کی ڈیوٹی میں مصروف اساتذہ اس کا کھل کر بائیکاٹ کریں گے۔ اگر کوئی احتجاج ہوتا ہے تو پھر اس کی ذمہ داری الیکشن کمیشن کی ہوگی۔اساتذہ فیڈریشن نے الزام لگایاہے کہ تربیت سے لے کر پولنگ تک، ریاستی الیکشن کمیشن نے کہیں بھی کورونا ہدایت نامے پر عمل نہیں کیا جس نے صورتحال کو خوفناک بنا دیا۔ فیڈریشن نے ایک فہرست جاری کی ہے جس میں دعویٰ کیاگیاہے کہ کووڈ انفیکشن کے باعث انتخابی ڈیوٹی کرنے والے 706 کے قریب اساتذہ اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں، اساتذہ کی ایک بڑی تعداد اس مرض میں مبتلا ہے۔ ان اساتذہ کے کنبے میں کتنے لوگ متاثر ہوئے ہیں اس کا کوئی حساب نہیں ہے۔لہٰذا2 مئی کو ووٹوں کی گنتی بند کردی جانی چاہیے۔ اساتذہ فیڈریشن نے ریاستی الیکشن کمشنر کو بھیجے گئے ایک خط میں لکھا ہے کہ پنچایت انتخابات کورونا کی وبا کے درمیان ہوئے تھے۔ 12/ اپریل کو ہی سنگھ نے کمیشن سے درخواست کی تھی کہ وہ انتخابات سے پہلے کووڈ کے تحفظ کیلئے رہنما اصولوں پر عمل کریں، لیکن اس کیلئے کوئی انتظام نہیں کیا گیا تھا۔اساتذہ اور عملے کو بغیر محافظوں کے ووٹ ڈالنے بھیجا گیا تھا، جس سے اساتذہ اور عملے کی ایک بڑی تعداد متاثر ہوئی تھی۔ اب تک 706/ اساتذہ کورونا انفیکشن کی وجہ سے اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔


Recent Post

Popular Links