Headlines

جموں وکشمیر کےڈی جی پی کادعویٰ :رواں سال صرف 10مقامی نوجوان دہشت گردی میں ملوث

جموں وکشمیر کےڈی جی پی کادعویٰ :رواں سال صرف 10مقامی نوجوان دہشت گردی میں ملوث

جموں وکشمیر کےڈی جی پی کادعویٰ :رواں سال صرف 10مقامی نوجوان دہشت گردی میں ملوث

ڈائریکٹر جنرل آف پولیس دلباغ سنگھ نے کا کہناہے کہ کتنا اچھا ہوتا اگر کوئی نوجوان دہشت گردی کا راستہ نہ اختیار کرتا کیونکہ دہشت گردی کا راستہ منتخب کرنے والے 10 میں سے 6 مارے جا چکے ہیں اور باقی چار کو بھی جلد ختم کر دیا جائے گا

سری نگر: جموں وکشمیر پولیس نے ایک بڑا دعویٰ کیاہے ۔ جموں وکشمیر پولیس کا کہناہے کہ وادی کشمیر میں مقامی نوجوان دہشت گردی یا تشدد کا راستہ اختیار نہیں کررہے ہیں۔ جموں و کشمیر کے پولیس ڈائریکٹر جنرل دلباغ سنگھ نے منگل کو کہا کہ رواں سال 2023 میں صرف 10 مقامی نوجوانوں نے دہشت گردی کا راستہ اختیارکیاہے جب کہ گزشتہ سال یہ تعداد 110 تھی۔ انہوں نے دہشت گردوں سے اپیل کی کہ وہ تشدد ترک کر کے قومی دھارے میں واپس آجائیں۔ کپواڑہ ضلع کے ہندواڑہ میں ماتا بھدرکالی مندر کا دورہ کرنے کے بعد سنگھ نے نامہ نگاروں کو بتایا، ’’جموں و کشمیر میں دہشت گردی کا تقریباً خاتمہ ہو چکا ہے اور اس کی بقیہ جڑیں بھی جلد ہی اکھاڑ دی جائیں گی۔‘‘

ڈائریکٹر جنرل آف پولیس دلباغ سنگھ نے کا کہناہے کہ کتنا اچھا ہوتا اگر کوئی نوجوان دہشت گردی کا راستہ نہ اختیار کرتا کیونکہ دہشت گردی کا راستہ منتخب کرنے والے 10 میں سے 6 مارے جا چکے ہیں اور باقی چار کو بھی جلد ختم کر دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا، ’’انہیں تشدد کا راستہ چھوڑ کر واپس آنا چاہیے۔‘‘ سنگھ نے کہا کہ دہشت گردوں کے بھی خاندان ہوتے ہیں اور لوگوں کو اس طرح مارنے سے سیکورٹی فورسز کو کوئی خوشی نہیں ملتی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *