مہاراشٹر:بی جے پی کے نارویکر بنے اسمبلی اسپیکر، فلور ٹسٹ آج

RushdaInfotech July 4th 2022 urdu-news-paper
 مہاراشٹر:بی جے پی کے نارویکر بنے اسمبلی اسپیکر، فلور ٹسٹ آج

ممبئی:3جولائی (ایجنسی) ایکناتھ شنڈے دھڑے کے راہل نارویکر مہاراشٹر قانون ساز اسمبلی کے نئے اسپیکر منتخب ہوئے۔ ادھو کیمپ کو ایک بار پھر مایوسی ہوئی۔ نارویکر کو 130 سے زیادہ ووٹ ملے ہیں۔ریاست کے حالیہ سیاسی حالات کے پیش نظر اسمبلی اسپیکر کے عہدے کا انتخاب انتہائی اہم تھا۔ قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ اسپیکر نئے حلف لینے والے وزیر اعلیٰ ایکناتھ شنڈے سمیت 16 باغی ایم ایل اے کے خلاف نااہلی کی کارروائی کو مسترد کر سکتے ہیں۔ انہیں نااہلی کے نوٹس ڈپٹی اسپیکر نرہری زروال نے گزشتہ ماہ جاری کیے تھے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ مزید، اگر اسپیکر شنڈے دھڑے کو حقیقی شیوسینا کے طور پر تسلیم کرتے ہیں، تو اس گروپ کو کسی دوسری سیاسی جماعت کے ساتھ ضم کرنے کی ضرورت نہیں ہوگی۔ ایکناتھ شنڈے نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ سینا کے لیجسلیچر پارٹی لیڈر ہیں کیونکہ انہیں 2/3 اکثریت حاصل ہے۔این سی پی ایم ایل اے جینت پاٹل نے کہا کہ میں گورنر کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ ہم بار بارا سپیکر کا انتخاب کرانے کا مطالبہ کر رہے تھے لیکن گورنر نہیں مانے، اب سمجھ میں آیا کہ ہم انتظار کیوں کر رہے تھے، اگر شنڈے صاحب پہلے بول دیتے تو وہ پہلے پہنچ چکے ہوتے۔ گورنر رول ماڈل بن چکے ہیں۔ ہماری درخواست ہے کہ قانون ساز کونسل کیلئے ہمارے ذریعہ دیئے گئے 12 ناموں کو قبول کیا جائے۔خیال رہے کہ مہاراشٹر قانون ساز اسمبلی کے اجلاس کے پہلے دن ’جے شری رام‘ کے نعرے لگائے گئے۔ یہ نعرہ بازی نئی حکومت میں شامل بی جے پی کے ایم ایل اے اور ٹیم شنڈے کے ایم ایل اے نے لگائے۔ اس نعرے بازی کے درمیان سابق وزیر اور ادھو کیمپ کے ایم ایل اے آدتیہ ٹھاکرے اسمبلی پہنچے، جہاں باغی گروپ کے ایم ایل اے نے انہیں روکا بھی نہیں۔ آدتیہ پہلی قطار میں بیٹھے تھے۔ایکناتھ شنڈے نے سیشن سے پہلے بالا صاحب ٹھاکرے کو خراج عقیدت پیش کیا۔ سی ایم ایکناتھ شنڈے اور حلیف ایم ایل اے نے کولابا کے ریگل سنیما کے قریب بالا صاحب ٹھاکرے کے مجسمے پر خراج عقیدت پیش کیا۔پہلی باربی جے پی کے ایم ایل اے، 45 سالہ راہل نارویکر نے جمعہ کو مہاراشٹر اسمبلی میں اسپیکر کے عہدے کیلئے پارٹی کے امیدوار کے طور پر اپنا نامزدگی داخل کیاتھا۔ پیشے سے ایک وکیل نارویکر جو ماضی میں سینا کے ساتھ ساتھ نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) سے وابستہ رہے تھے، اکتوبر 2019 کے مہاراشٹر اسمبلی انتخابات میں بی جے پی میں شامل ہوئے۔
زعفرانی پارٹی نے انہیں جنوبی ممبئی کے اعلیٰ ترین کولابا حلقہ سے میدان میں اتارا، جس میں انہیں جیت حاصل ہوئی۔


Recent Post

Popular Links