محکمہ آثار قدیمہ کی تردید تاج محل کے تہہ خانوں میں ہندو دیوی۔دیوتاؤ ں کی مورتیاں نہیں ہیں

RushdaInfotech July 4th 2022 urdu-news-paper
 محکمہ آثار قدیمہ کی تردید    تاج محل کے تہہ خانوں میں ہندو دیوی۔دیوتاؤ ں کی مورتیاں نہیں ہیں

آگرہ:3جولائی (ایجنسی) ہندوستانی محکمہ آثار قدیمہ نے تاج محل کے تہہ خانوں میں ہندو دیوی-دیوتاؤ ں کی مورتیاں ہونے کی تردید کی ہے۔ ایک آر ٹی آئی کی (حق اطلاعات) درخواست کے جواب میں یہ معلومات دی ہیں۔ اے ایس آئی نے یہ بھی بتایا کہ تاج محل مندر کی زمین پر نہیں بنا ہوا ہے۔ دراصل 12 مئی کو ترنمول کانگریس کے قومی ترجمان ساکیت ایس گوکھلے نے حق اطلاعات کی درخواست پیش کی تھی۔عرضی میں انہوں نے اے ایس آئی سے دو سوالوں کے جواب مانگے تھے۔ پہلے سوال میں انہوں نے تاج محل کی زمین پر مندر ہونے کا ثبوت مانگا تھا،جبکہ دوسرا سوال تہہ خانوں کے 20 کمروں میں ہندو دیوی- دیوتاؤں کی مورتیاں ہونے سے وابستہ تھا۔اے ایس آئی نے ایک سطر میں اس کا جواب دیا ہے۔ اے ایس آئی کے رابطہ عامہ کے افسر مہیش چند مینا نے پہلے جواب میں صرف ’نو‘ لکھا اور دوسرے سوال کے جواب میں لکھاکہ تہہ خانوں میں ہندو دیوی-دیوتاؤں کی مورتیاں نہیں ہیں‘۔خیال رہے کہ حال ہی میں ہندو شدت پسند تنظیموں نے تاج محل کو ’تیجو مہاآلیہ‘ قرار دیتے ہوئے اس کے بند کمروں میں ہندو دیوی دیوتاؤں کی مورتیاں موجود ہونے کا دعویٰ کیا تھا۔ اس طرح کے دعوؤں کے بعد یہ معاملہ شہ سرخیوں میں آگیا تھا۔ وہیں ایودھیا کے ایک بی جے پی لیڈر نے ہائی کورٹ کی لکھنؤ بنچ میں تہہ خانوں کو کھولنے کے حوالہ سے عرضی داخل کی تھی، جسے عدالت عالیہ نے خارج کر دیا تھا۔


Recent Post

Popular Links