اسکولی نصاب پر نظر ثانی کے معاملے میں الجھن کھڑی کر کے ریاستی حکومت خود سماجی ہم آہنگی کو دھکہ پہنچارہی ہے:کمار سوامی

RushdaInfotech May 27th 2022 urdu-news-paper
اسکولی نصاب پر نظر ثانی کے معاملے میں الجھن کھڑی کر کے ریاستی حکومت خود سماجی ہم آہنگی کو دھکہ پہنچارہی ہے:کمار سوامی

ہاسن:26مئی (سالارنیوز)ریاستی حکومت اسکولی نصاب پر نظرثانی کے معاملے میں الجھن کھڑی کرکے سماجی ہم آہنگی کو دھکہ پہنچارہی ہے۔یہ بات سابق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے کہی۔انہوں نے یہاں ایک نجی تقریب میں شرکت سے قبل ہیلی پیڈ پر اخباری نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ریاسی حکومت تعلیم کے شعبے میں بھی کئی طرح کی الجھنیں پیدا کررہی ہے۔ اس سے قبل ساحلی علاقے میں نقاب کے معاملے کو لے کر ہنگامہ کھڑاکیاگیا،بعد میں اسکولوں کے نصابی کتابوں کی تیاری اور نظر ثانی کے معاملے میں بھی کئی معزز شخصیتوں کی تاریخ بدلنے کاکام کررہی ہے۔حکومت کے اس رویے سے سماج میں بدامنی پھیل رہی ہے اور تشدد کو ہوا مل رہی ہے۔والدین کے دلوں میں حکومت اور سیاست دانوں کے تعلق سے نفرت پید ا ہوچکی ہے،ان کے معصوم بچوں کے مستقبل کے ساتھ کھیلنے اور ماحول کو خرا ب کرنے کے معاملے کو لے کر والدین میں برہمی پائی جارہی ہے۔بچوں کی تعلیم کیلئے اچھاماحول فراہم کرناحکومت کی ذمہ داری ہے،مگرموجود ہ حکومت اس میں پوری طرح ناکام ہوچکی ہے۔کمارسوامی نے کہا کہ تعلیمی شعبے میں سیاست ہر گز نہیں لائی جانی چاہئے۔بی جے پی کے زعفرانی ایجنڈے سے تعلیم کا شعبے کو نقصا ن پہنچ رہاہے۔انہوں نے مزید کہاکہ نصابی کتابیں منظر عام پر آنے کے بعد ان کا مطالعہ کرکے ہی اس تعلق سے مزیدبیان دیں گے۔کمار سوامی نے اخباری نمائندوں کے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ریاستی قانون ساز کونسل انتخابات میں عام کارکن کو ہی ٹکٹ دیاگیاہے،شراونابھی پارٹی کے وفادار کارکن رہے ہیں۔راجیہ سبھا انتخابات میں تیسرے امیدوار کو میدان میں اتارنے کے معاملے میں دونوں قومی پارٹیوں کے پاس ووٹوں کی کمی ہے،ہمارے پاس قومی پارٹیوں سے زیادہ اراکین اسمبلی کی تعداد ہے۔اس معاملے میں بہت جلد فیصلہ کیاجائے گا۔انہوں نے مزید کہاکہ جنتا جل دھارے پروگرام میں زیادہ مصروف رہنے کی وجہ سے انتخابات کے سلسلے میں زیادہ توجہ نہیں دی گئی۔آئندہ 15دنوں میں اسمبلی انتخابات کیلئے جے ڈی ایس امیدواروں کی فہرست جاری کردی جائے گی،اس کیلئے فہرست تیارہے۔ہاسن اسمبلی حلقہ سمیت تمام حلقوں کے امیدواروں کی فہرست جاری کردی جائے گی۔ضلع پنچایت اور بی بی ایم پی انتخابات ڈیڑھ سال قبل ہی کرائے جانے چاہئے تھے،مگر ریزرویشن کی تبدیلی سمیت دیگر دستوری معاملات کی خلاف ورزی کئے جانے پر انتخابات کی کارروائی میں تاخیر ہورہی ہے۔اس موقع پر ضلع پنچایت کے سابق نائب صدر ایچ پی سواروپ اور دیگر موجود تھے۔


Recent Post

Popular Links