سڑکوں پر پڑنے والے اوور لوڈ پر قابوپانے اقدامات ضروری:سی سی پاٹل

RushdaInfotech September 20th 2021 urdu-news-paper
سڑکوں پر پڑنے والے اوور لوڈ پر قابوپانے اقدامات ضروری:سی سی پاٹل

چتردرگہ:19ستمبر(سالارنیوز)راستوں پر پڑنے والے اوور لوڈ (افزود وزن) پر قابوپانے کیلئے ضروری اقدامات کرنے چاہئیں۔ یہ بات ریاستی وزیر برائے تعمیرات عامہ سی سی پاٹل نے کہی۔انہوں نے یہاں 25کروڑ روپئے کی لاگت سے محکمہ تعمیرات عامہ کے ڈیویژنل آفس،وی آئی پی گیسٹ ہاؤزکے افتتاح اور وی وی آئی پی گیسٹ ہاؤز اور سکیورٹی ہاؤز کے تعمیری کام کا سنگ بنیاد رکھنے کے بعد اپنے خطاب میں کہاکہ اکثرسڑکیں اوور لوڈ کی وجہ سے خستہ حالی کا شکار ہورہی ہیں،اس مسئلے کے حل اور سڑکوں پر اوور لوڈ پڑنے سے بچانے کیلئے محکمہ ٹرانسپورٹ کو سختی کے ساتھ اقدامات کرنے ہوں گے۔شمالی کرناٹک اور بامبے کرناٹک علاقے کے لوگوں کوبنگلور پہنچنے کیلئے درمیانی کرناٹک علاقے میں موجود چتردرگہ سے ہی گذرناپڑتاہے،اس لئے یہاں ایک ہائی ٹیک گیسٹ ہاؤز کی تعمیر کی ضرورت تھی،اس کے تحت وی آئی پی اور وی وی آئی پی گیسٹ ہاؤز کی تعمیر کوممکن بنایاجارہاہے۔راستوں کی تعمیر میں انجینئروں کا کردار اہم ہوتاہے۔تقریباً 20 سے 30سالوں تک سڑکوں کی حالت خستہ نہ ہوایسی سڑکیں تعمیر کی جانی چاہئیں۔ انجینئروں اور ٹھیکہ داروں کو چاہئے کہ تعمیری کام کے دوران پیش آنے والی قانونی رکاوٹوں کو پہلے ہی حل کرلیں،تعمیری کام شروع ہونے کے بعد درمیان میں رکاوٹ کھڑی ہونے سے حکومت اور عوام دونوں کا نقصان ہوتاہے۔ضلع نگران کار وزیر بی سری راملونے کہاکہ ڈی آر ڈی او بارک،آئی آئی ایس سی کی وجہ سے چتردرگہ کو عالمی سطح پر مقبولیت حاصل ہے،ضلع میں 65فیصد رویکسی نیشن کی کارروائی مکمل کرلی گئی ہے۔17ستمبر کو منعقدہ ویکسین میلہ میں ضلع بھر میں 75 ہزار افراد کو ٹیکے لگائے گئے ہیں،ضلع کے دیہی علاقوں میں کووڈ ویکسین نہ لینے کی خبریں عام ہونے کی وجہ سے کے ایس آر ٹی سی بس اسٹانڈوں میں بھی ویکسین کے تعلق سے بیداری پیداکی جارہی ہے۔رکن اسمبلی جی ایچ تپاریڈی نے کہاکہ شہر کی مضافات میں 25کروڑ روپئے کا فنڈ ضلع انتظامیہ بھون کی تعمیر کیلئے فراہم کرایاگیاہے۔بہت جلد تعمیری کام کیلئے سنگ بنیاد رکھاجائے گا۔اس موقع پر رکن قانون ساز کونسل چدانند ایم گوڈا،محکمہ تعمیرات عامہ کے انجینئر بی ٹی کانت راجو،ڈاکٹر وائی اے نارائن سوامی ایس لنگامورتی،سٹی منسپل کونسل کی صدر تنماونکٹیش اور دیگر موجود تھے۔


Recent Post

Popular Links