27ستمبر کو کسان لاک ڈاؤن ٹکیت نے کہا”کوئی سڑک پر نہ چلے،پھنسا رہے گا“

RushdaInfotech September 20th 2021 urdu-news-paper
27ستمبر کو کسان لاک ڈاؤن  ٹکیت نے کہا”کوئی سڑک پر نہ چلے،پھنسا رہے گا“

شاہجہاں پور-19ستمبر(ایجنسی)بھارتیہ کسان یونین (بی کے یو)کے رہنما راکیش ٹکیت نے کہا کہ27ستمبر کو کسانوں کا لاک ڈاؤن ہے، جو لوگ بھی اناج کھاتے ہیں وہ ایک دن کسانوں کے نام کر دیں - اس دن کوئی بھی سڑک پر نہ نکلے،جو بھی نکلے گا وہ پھنسا رہ جائیگا- انہوں نے کہاکہ کسانوں کو پیچھے ہٹا کر سرکار کیا جیتنا چاہتی ہے؟ ہم اپنے حق کی لڑائی لڑ رہے ہیں -راکیش ٹکیت نے کہا کہ کسانوں کی تحریک فصلوں اور نسلوں کو بچانے کی تحریک ہے اور جب تک مرکزی حکومت کسانوں پر تھوپے گئے کالے زرعی قوانین کو واپس نہیں لے لیتی ہے، وہ کسانوں کے تعاون سے دہلی سرحدوں پرکھڑے رہیں گے- انہوں نے شاہجہاں پور میں کسانوں کے ایک جلسہ عام کو خطاب کرتے ہوئے کہاکہ تحریکوں میں مذہبی مقامات کا خاص تعاون ہے اور گرو گوبند سنگھ نے اپنے دورے کے دوران کھاپ پنچایتوں سے رابطہ کیا تھا اور اس کے بعد متاثرین کو صبر کرنے کو کہا تھا - انہوں نے بتایا کہ اس کے بعد سنگھ نے بندہ سنگھ بہادر کو سر ناری گاؤں بھیجا،جہاں کے لوگوں نے فوج بنا کر سرحد کا قلعہ فتح کیا تھا -انہوں نے کہا کہ آج بھی کارپوریٹ گھرانوں اور مرکزی حکومت کے گٹھ جوڑ سے کسانوں اور مزدوروں کے حقوق پر ڈاکہ ڈالا جا رہا ہے، ایسی صورتحال میں اب وقت آگیا ہے کہ سادھو سنتوں کی موجودگی میں کھاپ پنچایتوں سے نکلے کسان جنگجو سرکار کی جڑیں ہلا کر رکھ دیں - جب تک کالے قوانین واپس نہیں لے لئے جاتے ہیں کسان دہلی کی سرحدوں پر ہی ڈٹے رہیں گے -جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے بھارتیہ کسان یونین (چڈونی گروپ)کے قومی صدر گرنام سنگھ چڈونی نے دہلی کی سرحدوں پر کسانوں کی تحریک کو دھرم یدھ قرار دیا- انہوں نے کہا کہ یہ مذہبی جنگ کسانوں کے حقوق کیلئے لڑی جا رہی ہے جبکہ حکومت کا منشابھارت کے کسانوں اور مزدوروں کو غلام بنانا ہے جسے کسی بھی حالت میں پورا نہیں ہونے دیا جائے گا-


Recent Post

Popular Links