بدنام زمانہ نوئیڈا نٹھاری سانحہ: سریندر کولی12و یں معاملہ میں مجرم، منیندر سنگھ پنڈھیر بری،سزا پر فیصلہ آج

RushdaInfotech January 16th 2021 urdu-news-paper
  بدنام زمانہ نوئیڈا نٹھاری سانحہ:  سریندر کولی12و یں معاملہ میں مجرم، منیندر سنگھ پنڈھیر بری،سزا پر فیصلہ آج

غازی آباد-15جنوری (ایجنسی)جمعہ کے روز نوئیڈا کے مشہوراور بدنام زمانہ”نٹھاری سانحہ“میں غازی آباد کی سی بی آئی خصوصی عدالت نے 12 ویں کیس میں فیصلہ سنایا-عدالت نے سریندر کولی کو سزا سنائی، تاہم منیندر سنگھ پنڈھیر کو ان کے خلاف عدم ثبوت کی وجہ سے بری کردیا گیا،البتہ اس سلسلے میں کل سزا سنائی جائے گی- اس معاملہ میں سی بی آئی نے کولی اور پنڈھیر کیخلاف اغوا، قتل اور عصمت دری کے الزام میں چارج شیٹ داخل کی تھی- نٹھاری سانحہ سے متعلق 11معاملہ میں کولی کو پہلے ہی سزائے موت سنائی جاچکی ہے-خیال رہے کہ 12 نومبر 2006 کو نٹھاری میں رہنے والی ایک لڑکی کوٹھی صاف کرنے کیلئے پنڈھیر کے گھر کیلئے نکلی تھی، پھر اس کے بعد وہ واپس نہیں لوٹ سکی- اہل خانہ نے تلاشی لی، لیکن کوئی سراغ نہیں ملا- اہل خانہ نے پولیس میں شکایت کی- پولیس نے رپورٹ درج نہیں کی- اس کے بعد جب پنڈھیر کی کوٹھی کے پیچھے نالہ صاف کیا گیا تو بہت سے انسانی ڈھانچے ملے، اس کے بعد پورے ملک میں اس واقعہ کے سلسلے میں ہلچل مچ گئی، تب یہ معاملہ منظر عام پر آیا- اہل خانہ کو مہلوکہ لڑکی کی پائل ملی تھی،یہ 12 واں کیس تھا- نٹھاری کیس میں مجموعی طور پر 19 مقدمات درج کئے گئے تھے - سی بی آئی کے وکیل جے پی شرما نے کہا کہ یہ ملک کی تاریخ کا پہلا کیس ہے جس میں اب تک 11 مرتبہ مجرم کو سزائے موت سنائی جاچکی ہے- ایک معاملے میں عدالت نے سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کردیا تھا-منیندر سنگھ پنڈھیر کے وکیل دیویندر سنگھ نے بتایا کہ سریندر کولی کیخلاف 17 مقدمات درج ہیں - ایک ہی وقت پنڈھیر پر 6 مقدمات درج کیے گئے ہیں - پنڈھیر کو3 معاملات میں بری کردیا گیا ہے-خیال رہے کہ29 دسمبر 2006 کو نوئیڈا کے نٹھاری میں منیندر سنگھ پنڈھیر کی کوٹھی کے پیچھے نالے میں 19 بچوں اور خواتین کے ڈھانچے دریافت ہوئے تھے- چارج شیٹ کے مطابق پنڈھیر کی کوٹھی میں 16/ افراد ہلاک کئے گئے تھے،اس معاملے میں پولیس نے پنڈھیر کو اس کے نوکر سریندر کولی سمیت گرفتار کیا تھا- کولی اور پنڈھیر کوٹھی کے پاس سے گزرنے والی لڑکیوں اور بچوں کو پکڑتا تھا،ان کے زیادتی کے بعدہلاک کردیاکرتاتھا، اور پھر لاش کوٹھی کے عقبی حصہ کے نالے میں پھینک دیا کرتا تھا -


Recent Post

Popular Links