شیواجی نگرکا سلطانجی گنٹہ روڈ میٹرو سرنگ کی کھدائی کے سبب دھنس گیا عمارتوں کو لاحق خطرہ کے سبب مقامی مکینوں میں دہشت،میٹرو حکام کی طرف سے مرمت کا کام جاری

RushdaInfotech October 18th 2020 urdu-news-paper
شیواجی نگرکا سلطانجی گنٹہ روڈ میٹرو سرنگ کی کھدائی کے سبب دھنس گیا عمارتوں کو لاحق خطرہ کے سبب مقامی مکینوں میں دہشت،میٹرو حکام کی طرف سے مرمت کا کام جاری

بنگلورو۔17اکتوبر(سالار نیوز)شہر کے شیواجی نگر علاقہ میں آنے والے اسلامی بیت المال کے قریب آنے والی اہم سڑک سلطانجی گنٹہ کا ایک حصہ جمعہ کی رات اچانک زمین میں دھنس گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ اس علاقہ میں فی الوقت میٹرو کے لئے زیر زمین سرنگ کی کھدائی کا کام جاری ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ جمعہ کی شب جیسے ہی اس علاقے میں سڑک کا حصہ دو جانب سے دھنسنے لگا تو لوگوں نے پہلے تو یہی سمجھا کہ شاید مسلسل بارش کی وجہ سے زمین کی حصہ نرم ہو کر یہ سڑک بیٹھ گئی ہے لیکن بعد میں جب بی ایم آر سی ایل اور کھدائی کا کام کرنے والی کمپنی ایل اینڈ ٹی کے انجینئرس اس مقام کا معائنہ کرنے کے لئے پہنچے تو لوگوں کو اس بات کا علم ہوا کہ میٹرو کی کھدائی کے سبب سڑک کا یہ حصہ بیٹھ گیا ہے۔ اس علاقہ میں زیر زمین کھدائی کے لئے بی ایم آر سی ایل کی ایک ٹنل بورنگ مشین کام کر رہی ہے اور تقریباً ڈیڑھ ماہ کے عرصہ سے زمین کھدائی کاکام جاری ہے۔ سلطانجی گنٹہ میدان سے شیواجی نگر بس اسٹانڈ تک سرنگ بنانے کے لئے مشین ایک جانب کام کر رہی ہے تو دوسری طرف ایک اور مشین اسی میدان سے پاٹری ٹاؤن میدان تک کھدائی میں لگی ہوئی ہے۔ حال ہی میں وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا نے اس مشین کی کھدائی کا کام شروع کروایا تھا۔اس وقت سے زیر زمین کھدائی کا کام جاری ہے۔ جمعہ کی شام اس علاقہ میں سڑک کا ایک حصہ بیٹھ جانے کے بعد مقامی لوگ کافی پریشان ہیں۔ لوگوں کو خوف ہے کہ سڑک کا یہ حصہ بیٹھ جانے سے علاقہ کی آس پاس کی متعدد عمارتیں بھی کھدائی کے دوران کمزور پڑ گئی ہیں۔میٹرو ریل کارپوریشن اور ایل اینڈ ٹی کی طرف سے فوری طور پر اس سڑک کو بند کر کے یہاں پر دھنسے ہوئے حصہ کو کانکریٹ سے بھر نے اور سڑک کے نیچے موجود ڈرائنیج اور پانی کی پائپ لائن کی مرمت کا کام شروع کردیا گیا۔ اس سلسلہ میں مقامی رکن اسمبلی رضوان ارشدنے بتایا کہ میٹرو کی سرنگ کی کھدائی کے دوران سڑک کا دھنس جانا تشویش کا باعث ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں لوگو ں کو جس طرح کے خدشات لاحق ہیں ان کے بارے میں وہ پیر کے روز بنگلورو میٹرو ریل کارپوریشن کے افسروں کے ساتھ بات کریں گے اور ان سے دریافت کریں گے کہ کیا اس علاقہ میں کھدائی سے قبل میٹرو حکام نے ٹھیک طرح سے مٹی کی جانچ کی تھی یا نہیں۔ اور اگر نہیں کی تھی تو دوبارہ مٹی کی جانچ کر کے تمام احتیاطی تدابیر کے ساتھ کھدائی کرنے کے لئے انتظامات کرنے کی گزارش کی جائے گی۔ شیواجی نگر اور سلطانجی گنٹہ کا علاقہ چونکہ ایک قدیم تالاب کا حصہ ہے،اس لئے یہاں کھدائی کے مرحلہ میں میٹرو حکام کو زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔رضوان ارشد نے کہا کہ اس علاقہ میں میٹرو کی کھدائی کے دوران عوامی اور نجی املاک کو نقصان نہ پہنچنے پائے اس کے لئے میٹرو حکام سے گزار ش کی جائے گی، احتیاط کے باوجود بھی اگر املاک کو نقصان پہنچا تواس کے مالکان کو مناسب ترین معاوضہ ملے اس کے لئے پیر کے روز وہ بی ایم آر سی ایل کے افسروں سے بات چیت کریں گے۔


Recent Post

Popular Links