این ڈی اے کو اکثریت ملنے سے ختم ہوارام جنم بھومی تنازعہ:نڈا

RushdaInfotech October 17th 2020 urdu-news-paper
این ڈی اے کو اکثریت ملنے سے ختم ہوارام جنم بھومی تنازعہ:نڈا

نوادہ16/ اکتوبر (ایجنسی)غلطی اور کمزوری کو انسان جتنا چھپائے وہ کسی نہ کسی طرح ظاہرہوئی جاتی ہے-ایسے موقع پر شعر کا ایک مصرع ہرکسی کو یاد آجاتاہے کہ ”حقیقت خود کو منوالیتی ہے مانی نہیں جاتی“-بابری مسجد ملکیت کو رام مندر کی تعمیر کیلئے دئے گئے سپریم کورٹ کے فیصلہ پر جمہوریت اور انسانیت پسند طبقہ نے یہ کہتے ہوئے آوازاٹھائی تھی کہ مودی اور آر ایس ایس کی خواہشات اور ان کے جذبات کا خیال رکھتے ہوئے یہ فیصلہ سنایاگیاہے،جس پر بہت سارے لوگوں نے اعتراض کیاتھا،حالانکہ کچھ ہی دنوں بعد وزیراعظم سمیت دیگر انتہاپسند لیڈروں نے اسے اپنی حکومت کا کارنامہ قراردیاتھا-اور آج بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے قومی صدر جے پی نڈا نے اعتراف کرتے ہوئے کہاکہ گذشتہ لوک سبھا انتخاب میں قومی جمہوری اتحاد کو عظیم اکثریت ملنے کا نتیجہ ہے کہ آرٹیکل 370، رام جنم بھومی تنازع اور تین طلاق کو ختم کیاجاسکا -ان کے اس بیان سے جمہوریت پسندوں میں کھلبلی مچے یا نہ مچے لیکن اتنا تو واضح کردیاگیاہے کہ مودی حکومت عدالت پر بھی اپنی گرفت رکھتی ہے-یہی وجہ ہے کہ بابری مسجد ملکیت کے بعد بابری مسجد انہدام میں بھی تمام ملزم باعزت بری ہوگئے - بی جے پی صدر نے کہاکہ کانگریس نے سالوں تک رام جنم بھومی تنازعے کا حل ڈھونڈنے کی کوشش نہیں کی لیکن گذشتہ لوک سبھا انتخاب میں این ڈی اے کو ملی عظیم اکثریت اور مسٹر مودی کے دوبارہ وزیراعظم بننے کے بعد ہی اجودھیا میں سالوں سے زیر التوا رام جنم بھومی تنازعہ کا حل نکال لیا گیا - انہوں نے کہاکہ اب وہاں رام مندر کی تعمیر ہورہی ہے -


Recent Post

Popular Links