مہاجر مزدوروں کی موت کا ریکارڈ نہیں،تو وہ مرے نہیں؟:راہل گاندھی

RushdaInfotech September 16th 2020 urdu-news-paper
مہاجر مزدوروں کی موت کا ریکارڈ نہیں،تو وہ مرے نہیں؟:راہل گاندھی

نئی دہلی۔15ستمبر(آئی این ایس) کانگریس کے رہنما راہل گاندھی نے مودی سرکار کے اس جواب پر سخت حملہ کیا ہے، جس میں حکومت نے کہا ہے کہ اس کے پاس مہاجر مزدوروں کی ہلاکت سے متعلق کوئی ڈیٹا نہیں ہے۔ پیر کے روز پارلیمنٹ کے مانسون اجلاس کے پہلے روز مزدوروزارت نے ایک تحریری جواب میں کہا تھا کہ حکومت کے پاس لاک ڈاؤن میں مہاجرمزدوروں کی ہلاکت کا ریکارڈ نہیں ہے، لہٰذا معاوضے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے۔ واضح رہے کہ راہل گاندھی فی الحال سونیا گاندھی کی صحت کی جانچ کے لئے بیرون ملک گئے ہوئے ہیں۔منگل کو ایک ٹویٹ میں راہل گاندھی نے حکومت کے ردعمل پرلکھا کہ مودی حکومت کو نہیں معلوم کہ کتنے مہاجر مزدور لاک ڈاؤن میں ہلاک ہوئے اور کتنی ملازمتیں ضائع ہوئیں۔ آپ نے شمار نہیں کیا تو کیا موت نہیں ہوئی؟ افسوس کی بات ہے کہ ان کی موت کو لوگوں نے دیکھا، زمانے نے دیکھا لیکن ایک مودی حکومت ہے جس کو کوئی خبر نہیں ہے۔ مودی حکومت نہیں جانتی کہ لاک ڈاؤن میں کتنے مہاجرمزدور ہلاک ہوئے اور کتنی ملازمتیں چلی گئیں۔واضح رہے کہ پیر کو حکومت سے پوچھا گیا تھا کہ کیا حکومت کے پاس مہاجر مزدوروں کی آبائی ریاستوں میں واپسی کا کوئی ڈیٹا موجود ہے۔ اپوزیشن نے اس سوال میں یہ بھی پوچھا تھا کہ کیا حکومت کو معلوم تھا کہ اس عرصے میں بہت سے مزدور اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں اور کیا حکومت کے پاس ان کے بارے میں کوئی تفصیلات ہیں؟ کیا ایسے خاندانوں کو مالی امداد یا معاوضہ دیا گیا؟
اس پر مرکزی وزیر سنتوش کمار گنگوار نے اپنے تحریری جواب میں کہا کہ اس طرح کے اعداد و شمار کو ریکارڈ میں نہیں رکھا گیا ہے۔ تو ایسی صورت میں اس پر کوئی سوال ہی نہیں اٹھتا ہے۔مارچ میں جب سے حکومت نے سخت لاک ڈاؤن نافذ کیا ہے، تب سے راہل گاندھی مہاجر مزدوروں کے معاملے پر حکومت پر حملہ آور ہو رہے ہیں۔ کورونا وائرس کی وجہ سے نافذ اس لاک ڈاؤن میں ملک بھر میں لاکھوں کارکنان اپنی ملازمتوں سے محروم ہوگئے اور کچھ لوگ تو گھر پہنچنے سے پہلے ہی مرگئے۔حزب اختلاف نے ایسے خاندانوں کے معاوضے کے حوالے سے پارلیمنٹ میں یہ مسئلہ اٹھایا ہے، لیکن حکومت کا کہنا ہے کہ چونکہ اس کے پاس مہاجرمزدوروں کی ہلاکت کے کوئی ریکارڈ موجود نہیں ہیں، ایسی صورت میں معاوضے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے۔

 


Recent Post

Popular Links