کرناٹک کانگریس یونٹ میں تبدیلی سے سدارامیا کو جھٹکا سُرجے والا ریاست کے نئے انچارج۔ پارٹی کو مزید طاقتور بنانے کی ریاستی لیڈروں کو امید

RushdaInfotech September 13th 2020 urdu-news-paper
کرناٹک کانگریس یونٹ میں تبدیلی سے سدارامیا کو جھٹکا سُرجے والا ریاست کے نئے انچارج۔ پارٹی کو مزید طاقتور بنانے کی ریاستی لیڈروں کو امید

بنگلورو۔12/ستمبر (سالارنیوز) قومی سطح پر کانگریس پارٹی میں بڑی تبدیلیاں ہوئی ہیں۔پارٹی کے کئی اہم عہدوں پر بھاری پیمانے پر ردوبدل ہوا ہے۔ اسی طرح ریاست کرناٹک کے کانگریس انچارج کے عہدے میں بھی تبدیلی کردی گئی ہے۔ ریاست کے کانگریس انچارج اے آئی سی سی جنرل سکریٹری کے سی وینوگوپال کوکرناٹک کانگریس انچارج عہدہ سے ہٹادیاگیا ہے۔ان کی جگہ رندیپ سرجے والا کو ریاستی کانگریس امور کا انچارج نامزد کیا گیا ہے۔وینوگوپال کو کرناٹک کے انچارج کے عہدہ سے ہٹادئے جانے سے اپوزیشن لیڈر سدارامیا کو زیادہ دھکا لگا ہے کیونکہ وینوگوپال جب سے کرناٹک کے انچارج کا عہدہ سنبھالے تھے تب سے سدارامیا کے ساتھ ان کی خوب بنتی تھی۔سدارامیا کی جانب سے کئے گئے ہر فیصلہ پر وینوگوپال ہاں میں ہاں ملاتے تھے۔ پارٹی میں سدارامیا جو بھی فیصلہ کرتے اس کو ہائی کمان کی منظوری دلوانے میں وینوگوپال مددگار ثابت ہورہے تھے۔سدارامیا جس وقت اس ریاست کے وزیراعلیٰ بنے تھے تب سے وینوگوپال کو ریاست کا انچارج بنایاگیا تھا اور اب تک دونوں میں اچھاتال رہا۔ حالانکہ ریاست میں کئی سینئر کانگریس لیڈر پچھلے کئی دنوں سے وینوگوپال کو بدلنے کامطالبہ کررہے تھے لیکن اس پر توجہ نہیں دی گئی اور وینو گوپال کو ان کے عہدہ پر ہی بحال کیا جاتا رہا۔وینوگوپال کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کے بہت قریب اور دست راست ہیں۔جس کے سبب سدارامیا کو بھی راہل کے قریب کردیا تھا۔ سدارامیا اس کا پورا فائدہ اٹھارہے تھے۔ریاستی اسمبلی کے پچھلے انتخابات میں کانگریس کے خراب مظاہرہ کے بعد وینوگوپال نے انچارج کے عہدہ سے استعفیٰ دے دیا تھا لیکن ہائی کمان نے اس کو قبول نہیں کیا۔ کانگریس جے ڈی ایس مخلوط حکومت کی تشکیل کے جس وقت سدارامیا خلاف تھے وینوگوپال سدارامیا کے حق میں کھڑے تھے۔ بہرکیف وینوگوپال کرناٹک کے انچارج سے ہٹادئے جانے سے سدارامیا کو زبردست جھٹکا لگا ہے۔سُرجے والا قومی سطح پر ترجمان ہیں۔وہ اپنے تجربہ کا استعمال کرکے کرناٹک کانگریس کو مزید طاقتور بنانے کی کانگریس کے ریاستی لیڈر امید کررہے ہیں۔ اگلے اسمبلی انتخابات تک پارٹی کو جیت کے قابل بنانے کی امیدہے۔


Recent Post

Popular Links