شعیب اختر نے پاکستانی بولرز کو نیٹ بولرز قرار دیا

RushdaInfotech August 24th 2020 urdu-news-paper
شعیب اختر نے پاکستانی بولرز کو نیٹ بولرز قرار دیا

لاہور۔23/اگست (یو این آئی)پاکستان کے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے انگلینڈ کے خلاف تین میچوں کی سیریز کے تیسرے ٹیسٹ میں اظہر علی کی زیرقیادت ٹیم کی کارکردگی پر تنقید کی ہے۔انگلینڈ نے تیسرے اور آخری کرکٹ ٹیسٹ کے دوسرے دن جیک کرولی کی کیریئر میں پہلی ڈبل سنچری اور جوز بٹلر کے ساتھ شراکت کی بدولت 8 وکٹ پر 583 کے اسکور پر اپنی پہلی اننگز ڈکلیئر کردی۔ کرولی 267 اور بٹلر نے 152 رنز بنائے۔ بٹلر اور کرولی کے درمیان یہ شراکت انگلینڈ کی ٹیسٹ کرکٹ میں پانچویں بڑی شراکت تھی۔ اسی دوران دوسرے دن کا کھیل ختم ہونے تک پاکستان نے اپنی اننگز میں 24 رنز کے اندر 3 وکٹیں گنوا دیں۔شعیب اختر نے اپنے یوٹیوب چینل پر کہا کہ میں جارحانہ بالنگ کا رویہ جانتا ہوں۔ ان کا وکٹ لینے کا ارادہ ہے۔ مجھے نہیں معلوم کہ موجودہ پاکستان بالرز کو کیا سکھایا جارہا ہے۔ نسیم شاہ محض ایک ہی ایریا میں بولنگ کررہے ہیں، کوئی سلو بال یا باؤنسر نہیں۔ مجھے نہیں معلوم کہ جارحیت کی کمی کیوں ہے، ہم نیٹ بولر نہیں ہیں، ہم ٹیسٹ میچ کھیل رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمارے کھلاڑی یہ نہیں سمجھتے کہ جب آپ کے پاس صحیح طرز فکر نہیں ہے تو آپ کامیاب نہیں ہوسکتے۔ پاکستان لگتا ہے کہ ایک بہت ہی سادہ ٹیم ہے جس طرح سے ہم کھیل رہے ہیں اس سے ایسا ہی لگتا ہے۔ کیا یہ ہمیں 2006 کے بعد سے غیر ملکی سرزمین پر اپنی سب سے بڑی شکست کا سامنا کرنا پڑے گا۔ یہ پاکستان کی ایک انتہائی شرمناک کارکردگی ہے۔مجھے پاکستان ٹیم سے اس سیریز میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کی بہت امید تھی۔پاکستان ایک کلب کی ٹیم کی طرح لگتی ہے کرولی 300 رنز بنانے کے قریب تھے لیکن خوش قسمتی سے وہ آؤٹ ہوگئے۔ اہم بات یہ ہے کہ انگلینڈ کی ٹیم پاکستان کے خلاف پہلا ٹیسٹ جیتنے کے بعد سیریز میں 1-0 سے آگے ہے۔ اسی کے ساتھ ہی دوسرے ٹیسٹ میچ میں بھی کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہوسکا۔ تیسرے ٹیسٹ میں پاکستان 559 رنز سے پیچھے ہے۔


Recent Post

Popular Links