مسلم پرسنل لا ء بورڈ نے ایودھیا کے متعلق سخت الفاظ پر مشتمل بیان واپس لیا

RushdaInfotech August 7th 2020 urdu-news-paper
مسلم پرسنل لا ء بورڈ نے ایودھیا کے متعلق سخت الفاظ پر مشتمل بیان واپس لیا

لکھنؤ۔ 6/اگست (یواین آئی)آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ نے ایودھیا میں رام مندر کے سنگِ بنیاد کے سلسلے میں جاری سخت الفاظ پر مشتمل بیان واپس لے لیا۔ مذکورہ بیان میں بورڈ نے بابری مسجد کے کیس کے واقعہ کو ترکی کی مسجد آیا صوفیہ سے جوڑتے ہوئے اس سلسلے میں سپریم کورٹ کے فیصلے پر سوالیہ نشان لگایا تھا۔ اس سلسلے میں مسلم پرسنل لاء بورڈ اور آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے کنوینر اسد الدین اویسی کے خلاف دہلی پولیس کمشنر ایس این سری واستو سے ہندو سینانے شکایت کی تھی۔ اس کے فوراً بعد بورڈ کے سکریٹری ظفر یاب جیلانی نے ایک تازہ بیان جاری کرتے ہوئے بتایا کہ مذکورہ بیان بورڈ کے اراکین کی اجازت کے بغیر جاری کیا گیا تھا۔ اس لئے بورڈ کے جنرل سکریٹری نے اس بیان کو واپس لے لیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس بیان میں استعمال کئے گئے بعض الفاظ غیر ذمہ دارانہ طور پر لکھے گئے ہیں جس سے بورڈ کا کچھ لینا دینا نہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ بورڈ سپریم کورٹ کے فیصلہ کا احترام کرتا ہے۔ لیکن اس بات پر افسوس بھی ہے کہ اس فیصلہ پر نظر ثانی کیلئے بورڈ نے جو عرضی داخل کی تھی اس کی سماعت نہ ہوسکی۔انہوں نے کہا کہ بورڈ کی طرف سے یہ مسئلہ اٹھایا جاتا رہے گا۔ اس کے علاوہ انہوں نے وزیر اعظم مودی اور اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کے اس بیان کی مذمت کی ہے کہ متنازع مقام پر صدیوں سے مندر موجود تھا۔


Recent Post

Popular Links