بی جے پی حکومت نے مخلوط حکومت کے ترقیاتی کاموں کو روکا۔ سی ایم لنگپا

RushdaInfotech August 1st 2020 urdu-news-paper
بی جے پی حکومت نے مخلوط حکومت کے ترقیاتی کاموں کو روکا۔ سی ایم لنگپا

رام نگرم۔31/ جولائی (غضنفر علی بیگ بابو) رکن کونسل سی ایم لنگپا نے ریاستی بی جے پی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ مخلوط حکومت کی جانب سے ضلع کے کسانوں کی سہولت کی خاطر (پادرہلی، تمسندرا) ودیگر گاؤں میں زمینات کو پانی بہانے کی اسکیم جاری کی تھی،جس پر روک لگانے کا سہرا وزیر اعلیٰ ایڈی یورپا کے سرجاتا ہے۔ ضلع کانگریس دفتر میں طلب کردہ اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سی ایم لنگپا نے اس خیال کا اظہار کیا اور کہا کہ ایک سال 4/ ماہ تک برسراقتدار مخلوط حکومت نے ضلع کی ترقی کو مد نظر رکھتے ہوئے کئی اسکیموں کے لئے رقم جاری کی تھی، لیکن بی جے پی حکومت نے مخلوط حکومت کی اسکیموں کو جاری نہیں رکھا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ بڈدی اور بائر منگلا تالابوں کے نالوں کی ترقی کے لئے مخلوط حکومت کی جانب سے جاری رقم کو بی جے پی حکومت نے واپس لے لیا اور بی جے پی حکومت کو رونا وائرس پر قابو پانے میں بھی ناکام ہے۔لنگپا نے بتایا کہ سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا نے ریاستی حکومت کی جانب سے سینی ٹائزرس، بستر، ویٹی لیٹر ودیگر سازوسامان کی خریداری میں 2000 کروڑ گھپلہ کا الزام لگایا ہے، لیکن بی جے پی حکومت نے صرف 300کروڑ کی خریداری کی وضاحت کی ہے جو بالکل بے بنیاد ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ اس معاملہ کی تحقیق ہائی کورٹ جج کے ذریعہ کی جائے۔ رکن کونسل ایس روی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک بھر میں آئین کے تحت منتخب حکومتوں کو غیر آئینی طور پر گرانے کی بی جے پی کی روایت کے تحت ریاستی بی جے پی حکومت برسراقتدار آئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مرکزی حکومت نے آتمانربھر اسکیم کے تحت کورونا سے متاثر مزدوروں کو پی ایف کی رقم ادا کرنے کا اعلان کیا ہے، لیکن پی ایف کی رقم مزدوروں کا آئینی حق ہے۔انہوں نے بتایا کہ کورونا کی وجہ سے ضلع کے ریشم کاشتکاروں اور کسانو ں کی حالت بے حد خراب ہوچکی ہے۔ ریشم نافہ کی قیمت 100تا 150روپئے گھٹ چکی ہے، لیکن ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے۔ سابق رکن اسمبلی ایچ، سی بال کرشنا نے خطاب کرتے ہوئے الزام لگایا کہ بی جے پی حکومت نے ضلع کی ترقی کے لئے کچھ نہیں کیا ہے۔ اخباری کانفرنس میں کے پی سی سی رکن حاجی سید ضیاء اللہ، رمیش، ضلع صدر گنگا دھر، جنرل سکریٹری نرسمہا مورتی،وینکٹیش، سابق ضلع پنچایت رکن راجو ودیگر حاضر رہے۔


Recent Post

Popular Links