بدعنوانی کا الزام لگانے والے سدارامیا اور شیوکمار کو بی جے پی کا لیگل نوٹس دونوں غیر مشروط معافی مانگیں ورنہ قانونی کارروائی کا سامنا کرنے تیار رہیں

RushdaInfotech August 1st 2020 urdu-news-paper
بدعنوانی کا الزام لگانے والے سدارامیا اور شیوکمار کو بی جے پی کا لیگل نوٹس دونوں غیر مشروط معافی مانگیں ورنہ قانونی کارروائی کا سامنا کرنے تیار رہیں

بنگلورو۔31/جولائی(سالارنیوز) حکمران پارٹی اور اپوزیشن کے درمیان الزام تراشی کرنا اس کا جواب دینا سیاست میں نئی بات نہیں ہے۔ کورونا کے ساز وسامان کی خریداری میں کروڑوں روپئے کی دھاندلیوں کا کانگریس نے الزام لگایا تو حکمران بی جے پی کو یہ ہضم نہیں ہوا۔ اسمبلی میں اپوزیشن کانگریس لیڈر وسابق وزیراعلیٰ سدارامیا اور کے پی سی سی صدر ڈی کے شیوکمار نے ریاستی بی جے پی حکومت پر الزام لگایا ہے کہ میڈیکل اشیاء کی خریداری میں 2000کروڑ روپئے کا گھپلہ ہوا ہے۔ ان دونوں کو بی جے پی نے آج لیگل نوٹس جاری کیا ہے۔ اے پی پلیکشی نامی ایک شخص کے ذریعہ سدارامیا اور ڈی کے شیوکمار کو نوٹس جاری کرنے والے بی جے پی نے کہاکہ دونوں نے ریاستی حکومت پر بدعنوانی کے جو الزامات لگائے ہیں اس کی غیر مشروط معافی مانگیں، نہیں تو دونوں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔ اس سلسلہ میں ملیشورم میں واقع پارٹی دفتر میں ایک اخباری کانفرنس طلب کرکے رکن کونسل این روی کمار، سابق رکن کونسل اشوتھ نارائن اور پارٹی کے ترجمان اے ایچ آنند نے کہاکہ دونوں کانگریس لیڈروں نے ریاستی حکومت کے خلاف جو الزامات لگائے ہیں اس کی دستاویزات اب تک جاری نہیں کی ہیں۔ اس موقع پر این روی کمار نے کہاکہ سدارامیا اور شیوکمار نے میڈیکل آلات کی خریدی میں حکومت پر 2/ہزار کروڑ روپئے کی بدعنوانی کا الزام ثبوت کے بغیر لگایا ہے۔ ان کا مقصد صرف حکومت کو بدنام کرنا ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ میڈیکل آلات کی خریداری میں ایک نئے پیسے کی بھی دھاندلی نہیں ہوئی ہے۔ محکمہ صحت وخاندانی بہبود، میڈیکل تعلیم اور وزارت اعلیٰ تعلیم نے اس کی تفصیل بھی دی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تمام آلات کی خریداری جانچ پڑتال کے بعد کی گئی ہے۔کووِڈ 19/ کے آلات جس وقت کرناٹک حکومت نے خریدی کی تھی اس وقت ایک قیمت رہی ہوگی، ہوسکتی ہے اس کے بعد مانگ کم ہوجانے کی وجہ سے قیمتیں کم کردی گئی ہوں گی۔ دونوں کانگریس لیڈران بی جے پی اور ایڈی یورپا حکومت کے امیج کو خراب کرنے کی نیت سے جھوٹے اور بے بنیاد الزامات لگائے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت نے اب تک جو طبی آلات خریدے ہیں وہ ابھی500/کروڑ روپئے سے کم کے ہیں،جب کہ اپوزیشن پارٹی2000کروڑ روپئے دھاندلیوں کا الزام لگارہی ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ اپوزیشن پارٹی کے نزدیک 500/کروڑ روپئے اور2000کروڑ روپئے میں کچھ فرق نہیں؟ یہ حساب کتاب شاید کے پی سی سی صدر کو معلوم نہیں۔ روی کمارنے کہاکہ دونوں کانگریس لیڈروں نے ریاستی حکومت پر جو بے بنیاد الزام لگایا ہے،اس کے لئے دونوں کو عوام کے سامنے غیرمشروط معافی مانگنی چاہئے، ورنہ دونوں قانونی کارروائی کا سامنا کرنے کے لئے تیار رہیں۔


Recent Post

Popular Links