19/پرائیویٹ اسپتالوں کے لائسنس رد عارضی طور پر اسپتال بند کرنے بی بی ایم پی کا حکم

RushdaInfotech August 1st 2020 urdu-news-paper
 19/پرائیویٹ اسپتالوں کے لائسنس رد  عارضی طور پر اسپتال بند کرنے بی بی ایم پی کا حکم

بنگلور:31/جولائی(سالار نیوز)ریاستی حکومت کے حکم نامے کے تحت کوروناوائرس کے متاثرین کے علاج کے لئے 50فیصد بیڈس مختص نہ کرنے والے 19/پرائیویٹ اسپتالوں کے لائسنس بی بی ایم پی کی طرف سے عارضی طور پررد کردئے گئے ہیں۔بی بی ایم پی ساؤتھ زون کی حدود میں آنے والے پانچ اسمبلی حلقوں میں شامل پرائیویٹ اسپتالوں کو ہیلتھ آفیسر کی طرف سے نوٹس جاری کئے جانے کے باوجود 50فیصد بیڈس مختص نہیں کئے تھے،جس کے سبب وزیر مال گذاری کی ہدایت کے مطابق جوائنٹ کمشنر اور ہیلتھ آفیسرس کی ٹیم نے ان 19پرائیویٹ اسپتالوں کے صدر دروازے پر لائسنس رد کئے جانے کے بینر لگادئے ہیں۔قدرتی آفات کنٹرول ایکٹ۔ 2005کے تحت تمام پرائیویٹ اسپتالوں میں کووِڈ۔19کے مریضوں کا علاج کیا جانالازمی ہے،جس کے تحت کوروناوائرس کے متاثرین کا علاج کرنے سے انکار کرنے اور مریضوں کے لئے بیڈ مختص نہ کرنے والے استالوں کے خلاف کارروئی کی گئی ہے اوراسپتال بند کرنے کا حکم جاری کرتے ہوئے ان کے لائسنس منسوخ کر دئے گئے ہیں۔پالیکے کے ساؤتھ زون میں شامل 19پرائیویٹ اسپتالوں نے قدرتی آفات پر قابوپانے کے اس قانون کی خلاف ورزی کی ہے،ان اسپتالوں کے خلاف پولیس تھانوں میں شکایت درج کرائی گئی ہے۔ساؤتھ زون کی حدود میں آنے والے ایچ سی جی کینسر اسپتال،ٹرینیٹی،مایا،انوگراہاوٹھلا،کالا بائریشورا،سیوا شیترا،دیپک اسپتال سمیت جملہ 19پرائیویٹ اسپتالوں میں 712بیڈس ہیں، ان میں سے 50فیصد بیڈس کورونامتاثرین کے لئے مختص کئے جانے چاہئے تھے۔قانون کی خلاف ورز ی کرنے والے ان پرائیویٹ اسپتالوں کے خلاف سخت کارروائی کی جاسکتی ہے۔قدرتی آفات کنٹرول ایکٹ۔2005کے تحت عدالت کے ذریعہ کیس درج کیا جاسکتاہے، ایک سال تک کی سزا بھی ہوسکتی ہے،اسی دوران آئی پی سی سیکشن 188کے تحت بھی مقدمہ دائر کیا جاسکتاہے،کے پی ایم اے ایکٹ کے تحت ان اسپتالوں پر جرمانہ عائد کیا جاسکتاہے۔


Recent Post

Popular Links