رمی جمرات کیلئے حجاج کو جراثیم سے پاک پیک شدہ کنکریوں کی فراہمی

RushdaInfotech August 1st 2020 urdu-news-paper
 رمی جمرات کیلئے حجاج کو جراثیم سے پاک پیک شدہ کنکریوں کی فراہمی

مکہ مکرمہ۔31جولائی(ایجنسی)سعودی عرب کی وزارت حج و عمرہ کی طرف سے حجاج کرام کو رمی جمرات کے لیے جراثیم سے پاک اور پیک شدہ کنکریاں فراہم کی گئیں۔ عرب خبر رساں ادارے العربیہ کے مطابق سعودی عرب کے قومی مرکز برائے انسداد امراض نے ایک بیان میں بتایا کہ رواں سال حج سیزن پر صحت پروٹوکول کی روشنی میں حجاج کرام کو سینی ٹائز کی گئی جراثم سے پاک اور پیک شدہ کنکریاں فراہم کی گئی ہیں۔بیان میں کہا گیا ہے کہ کورونا وبا سے بچاؤ کے لیے اختیار کردہ طریقہ کار کے مطابق رمی جمرات کے لیے حجاج کو چھوٹے چھوٹے گروپوں میں تقسیم کیا جائے گا، ایک وقت میں ایک سے زائد گروپ کو رمی کی اجازت نہیں ہوگی۔ اس کے علاوہ رمی جمرات کے مناسک حج کی ادائیگی کے دوران حجاج کرام ایک دوسرے کے درمیان ڈھائی میٹر کے فاصلے پر ہوں گے۔ہیلتھ پروٹوکول کے مطابق حجاج کرام کو رمی جمرات کے موقعے پر چہرے کو ماسک سے ڈھانپے، زیادہ سے زیادہ سینی ٹائرز استعمال کرنے اور جمرات کے لیے مقرر کردہ راستوں کا استعمال کرنے کی سختی سے تاکید کی گئی ہے۔ واضح رہے کہ حجاج کرام آج نماز عید کے بعد منیٰ روانہ ہوگئے جہاں سنت ابراہیمی کی پیروی کرتے ہوئے قربانی کی جارہی ہے جب کہ آج حجاج کرام سر بھی منڈوائیں گے۔حجاج منیٰ میں گیارہ اور بارہ ذی الحج کی راتیں گزاریں گے اور ہر دن زوال کے بعد تینوں جمرات کو کنکریاں ماری جائیں گی۔ 12 تاریخ کو تینوں شیاطین کوکنکریاں مارنے کے بعد جلد چاہیں تو غروب آفتاب سے قبل منٰی سے نکلنا ہوگا اور تاخیر چاہیں تو 13 تاریخ کی رات منٰی میں بسر کی جائے گی۔ حجاج اپنے وطن روانہ ہونے سے قبل الوداعی طواف کریں گے۔
حجاج کا مصرف ترین دن:
سعودی عرب میں آج 10 ذو الحجہ کو مناسکِ حج کا تیسرا روز ہے۔ حجاج کرام سب سے بڑے جمرہ العقبہ کی رمی کرنے کے بعد قربانی کریں گے اور پھر سر منڈوا کر احرام کی حالت سے باہر آ جائیں گے۔ اس کے بعد مکہ مکرمہ جا کر مسجد حرام میں طواف زیارت کریں گے اور پھر واپس آ کر رات مِنیٰ میں ہی گزاریں گے۔واضح رہے کہ 10 ذو الحجہ مناسکِ حج میں حجاج کرام کے لیے مصروف ترین دن ہوتا ہے۔اس سے قبل حجاج کرام نے گذشتہ روز 9 ذو الحجہ کو حج کا رکن اعظم وقوفِ عرفہ ادا کیا تھا۔ جمعرات کی شب مزدلفہ میں گزار کر حجاج کرام آج جمعہ کو نماز فجر کے بعد مِنیٰ واپس لوٹ آئے تھے۔
تمام حجاج کورونا سے محفوظ:
سعودی عرب کی وزارت حج نے باور کرایا ہے کہ حجاج کرام میں کورونا کا کوئی مریض سامنے نہیں آیا۔ تمام حجاج کرام وبا سے محفوظ ہیں اور وہ مکمل طورپر صحت مند اور تندرْست ہیں۔ سعودی وزرات صحت کے ترجمان ڈاکٹر محمد العبد العال نے روزانہ کی کورونا بریفنگ کے موقعے پر کہا کہ اللہ کا شکر ہے کہ اب تک تمام حجاج کرام کورونا کی وبا سے مکمل طور پر محفوظ ہیں۔ایک سوال کے جواب میں ترجمان وزارت صحت نے بتایا کہ حکومت نے حج کے موقعے پر تمام ہنگامی طبی اقدامات کیے ہیں۔ مشاعر مقدسہ میں ہنگامی طورپر فیلڈ اسپتالوں میں 1456 بستر تیار کیے ہیں جبکہ انتہائی نگہداشت کے مریضوں کے لیے 331 جب کہ قرنطیہ کے مریضوں کے لیے 272 بستر تیار کیے گئے ہیں۔ادھر سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ترجمان طلال الشلہوب نے بتایا کہ حجاج کرام میں کچھ غیر مجاز افراد کو داخل ہونے کی کوشش کے دوران گرفتار کیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھاکہ حجاج کرام کی صحت اور حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے ان میں سماجی فاصلے پر سختی سے عمل درآمد کرایا جا رہا ہے۔

 


Recent Post

Popular Links