پولیس حراست میں نوجوانوں کی موت، چوکی انچارج معطل

پولیس حراست میں نوجوانوں کی موت، چوکی انچارج معطل

ورانسی، 11اکتوبر (یو این آئی) اترپردیش میں وارانسی کے جیت پورہ علاقے میں پولیس کی حراست میں ایک نوجوان کی موت کے معاملے میں دو پولیس افسران پر کاروائی کی گئی ہے ۔سینئرپولیس سپرنٹنڈنٹ پولیس نے سخت ایکشن لیتے ہوئے تھانہ انچاج کولائن حاضر اور چوکی انچارج کو معطل کر دیا ہے۔سینئرپولیس سپرنٹنڈنٹ آر کے بھار دواج نے آج یہاں بتایا کہ ملزم پنٹو کی موت کے معاملے کی سنجیدگی سے تحقیقات کی جا رہی ہے ۔اس معاملے میں فوری کاروائی کرتے ہوئے کل رات پولیس چوکی انچارج درگیش یادو کو معطل اور تھانہ انچارج شری پرکاش گپتا کولائن حاضر کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملہ کی حساسیت کے پیش نظر اور واقعہ کے ہر پہلو کی تحقیقات کے لئے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس(پروٹوکال)ی سربراہی میں ایک کمیٹی قائم کی گئی ہے ۔قابل ذکر ہے کہ سریا لاٹ بھیرو باشندہ پنٹو راج بھر کو اسی علاقے کی ایک لڑکی کو بہلا پھسلا کر اغوا کرنے کے الزام میں پولیس نے گرفتار کیا تھا۔اس سے پولیس ا سٹیشن میں پوچھ گچھ کی جا رہی تھی۔ دریں اثنا، وہ ٹوائلٹ میں چلا گیا اور وہاں کوئی زہریلا مادہ کھالیا،جس کی وجہ سے وہ بے ہوش ہوگیا۔ پولیس نے اسے فوری طور پر ہسپتال میں داخل کرایا۔ ابتدائی علاج کے بعد اسے کاشی ہندو یونیورسٹی کے ٹراما سنٹر ریفر کردیا گیا جہاں جانچ کے بعد ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دے دیا۔نوجوان کی پولیس حراست میں موت کی اطلاع ملتے ہی اس کے لواحقین نے تھانہ کا گھیراؤ کرکے جم کر ہنگامہ کیا۔ ہنگامے کی خبرپاکراعلی پولیس افسران موقع پر پہنچے اور خاطی پولیس افسران کے خلاف فوری کاروائی کی۔پنٹو کی بہن کی شکایت پر پولیس نے گزشتہ رات اسی پولیس اسٹیشن میں پولیس اہلکاروں سمیت تین افراد کے خلاف ایف آر درج کی ہے ۔



Like us to get latest Updates